یہ شجر کاری کے لئے بہترین موسم ہے جہاں جگہ ملے کوئی سایہ دار یا پھل دار مقامی درخت ضرور لگائیں ۔رانا کامران شاہد

درخت انسانی صحت اور تندرستی کے لیے بہت اہمیت کے حامل ہیں جو ہمیں صاف شفاف فضا اور آپریشن کے ساتھ ساتھ بے شمار فائدے پہنچاتے ہیں موسم گرما میں ان کا سایہ ایک رحمت کی طرح ہوتا ہے ان خیالات کا اظہار رانا کامران شاہد چیئرمین پراپرٹی ڈیلر ایسوسی ایشن منڈی بہاوالدین نے کیا جیوے پاکستان ڈاٹ کام کے ساتھ ایک خصوصی گفتگو میں رانا کامران شاہد نے کہا کہ ساون کا مہینہ آرہا ہے اس مرتبہ بارشیں بھی جلد شروع ہو رہی ہیں اس لیے شجرکاری کے لیے یہ بہترین موسم ہے ہر شخص کو چاہئے کہ جہاں جگہ میسر ہوں وہاں سایہ دار اور پھل دار درخت ضرور لگائے بچوں کو بھی اس کے متعلق آگاہی دی جائے اور ان سے بھی نئے درخت لگائے جائیں اور انہیں نئے پودوں کے درخت بننے تک ان کی حفاظت کرنے اور ان کے فوائد سے آگاہ کیا جائے ہمارے ملک میں درختوں کی بہت کمی ہے اور ہمیں بہت ضرورت ہے کہ ہم نے درخت لگائیں گرمی میں شدت میں اضافہ ہوتا جا رہا ہے اگر ہم اس طرف توجہ دیں اور ہر شخص درخت لگانا شروع کر دے تو ہم انقلاب لا سکتے ہیں ہمیں گرمیوں کی شدید دھوپ میں درختوں کا سایہ تلاش کرنا پڑتا ہے اگر درخت کی طرح تو تو سایہ ہی سایہ ہوگا اور پھل دار درخت ہوں گے تو ہر طرف پھولوں کی بہار ہوگی صرف تمہاری صحت و تندرستی کے لیے بڑی اہمیت کے حامل ہیں ان سے میں بہت فوائد ہیں یہ ہمیں بیماریوں سے اور ڈاکٹر سے بچاتے ہیں یہ مفت میں آکسیجن مہیا کرتے ہیں اور کاربن ڈائی آکسائیڈ جذب کر لیتے ہیں اس کار خانے سے کیوں نہ فائدہ اٹھایا جائے ویسے بھی بڑھتی ہوئی آبادی اور پختہ مکانات بننے کے باعث درختوں میں کمی آئی ہے لکڑی کا استعمال بڑھ گیا ہے آنے والے دنوں میں لکڑی کے حصول کے لیے مزید درختوں کی ضرورت پڑے گی سب کو اپنے حصے کا درخت لگانا چاہیے پودوں کو پانی دیا ان کی حفاظت کریں ان کو جانوروں سے بچائیں ۔

رپورٹ نوید انجم فاروقی منڈی بہاولدین