کراچی اسٹاک ایکسچینج حملے کا بدلہ 24 گھنٹوں کے اندر اندر لے لیا گیا

بڑی خبر:
کراچی اسٹاک ایکسچینج حملے کا بدلہ 24 گھنٹوں کے اندر اندر لے لیا گیا۔ مصدقہ تفصیلات:👇👇

کراچی حملے سے نمٹنے کے بعد جب بی ایل اے نے حملے کی زمہ داری قبول کرتے ہوئے اُن 4 حملے آوروں کی تصاویر شیئر کی تو جو اُنہوں نے وردی پہن رکھی تھی وہ ایرانی فوج کی تھی جس سے اندازہ ہوا کہ اُنکی ٹریننگ کیسے اور کہاں ممکن بنائی گئی تھی۔
پھر دوسری طرف افغانستان سے کچھ رابطے ملے۔ 📞
یاد رہے کہ بی ایل اے ان دونوں ممالک میں موجود ہے۔ اور فنڈنگ ہمیشہ را (بھارتی ایجنسی) کی طرف سے کی جاتی ہے۔
اب ہوا کیا 24 گھنٹے کے اندر اندر۔۔۔۔۔۔:
۱- پہلا واقعہ حملے کے تقریباً 10 گھنٹے بعد افغانستان میں پیش آیا جہاں ایک حملے میں پولیس چیف شاہ محمد شاہ ہلاک ہو گئے اور اُنکا ڈرائیور زخمی۔۔۔۔!
۲- دوسرا واقعہ پاکستانی وقت کے مطابق رات 2 بجے کے قریب پیش آیا جس میں پاکستان کے بارڈر سے ملحقہ زہدان خاش روٹ پر ایرانی علاقہ گلوگاہ میں ایک ملٹری کمانڈر مجتبٰی میرشاکر کی ملٹری گاڑی کو ایک دھماکے سے تباہ کر دیا گیا۔ کمانڈر اور اُنکا ڈرائیور موقع پر ہلاک ہو گئے ہیں۔۔۔۔۔!
کہانی ختم ہوئی اور حساب جلد از جلد چکا دیا گیا۔ کیوں کہ اب ہم اُدھار رکھنے کے بلکل موڈ میں نہیں ہیں۔ پاکستان افواج اور آئی ایس آئی اپنے لوگوں کی اپنی سرحدوں کی اور اپنے ملک کی حفاظت میں کوئی کسر نہیں چھوڑے گی اور عوام کے اس اعتماد کو ہمیشہ قائم رکھا جائے گا⁦🇵🇰⁦✌

میرے عزیز ہم وطنو! اپنی دفاعی اداروں پر فخر کریں اور سوشل میڈیا پر انکا بھرپور عزم اور حوصلے سے نعرہ لگایا کریں۔ جو قومیں اپنی افواج کی عزت اور اُنکا سہارا نہیں بنتی وہ دنیا کے نقشے سے مٹا دی جاتی ہیں۔
اور ہمارے ملک کو تا قیامت رہنا ہے۔
“کرہ ارض پر ایسی کوئی طاقت نہیں جو پاکستان کو مٹا سکے”
پاکستان زندہ باد۔⁦🇵🇰⁩⁦

محمد منشاء ( دبئی )