ولادیمیر پوتن 2036 تک روس کے صدر منتخب

عالمی میڈیا کے مطابق ووٹنگ میں تہتر فیصد افراد نے پوٹن کو صدارت کے عہدے پر فائز رہنے کی خواہش کا اظہار کیا ہے اور اب وہ دو ہزار چھتیس تک صدارت کے عہدے پر براجمان رہیں گے۔

الیکشن کمیشن کے حکام نے ووٹنگ ختم ہونے سے پانچ گھنٹے قبل ہی ولادیمیر پوتن کی فتح کا اعلان کر دیا تھا۔ روس میں ریفرنڈم کا انعقاد اپریل میں ہونا تھا البتہ کورونا کی وجہ سے انتخابات بروقت ممکن نہ ہوسکے۔

الیکشن کمیشن کی جانب سے جاری ہونے والے حتمی اور سرکاری نتائج میں بتایا گیا ہے کہ ولادیمیر پوتن 77 فیصد ووٹ حاصل کرنے میں کامیاب رہے۔

ملک وبا کے باعث روس کی تاریخ میں پہلی بار ووٹنگ کا عمل ایک ہفتے تک جاری رہا اور عوام نے احتیاطی تدابیر کے ساتھ حق رائے دہی استعمال کیا۔

ولادیمیر پوتن کے مخالفین نے پولنگ میں بے ضابطگیوں اور ووٹرز پر دباؤ ڈالنے کا الزام عائد کیا ہے۔ مخالفین کا مؤقف تھا کہ صدر پیوٹن نے بڑے پیمانے پر ریاستی مشینری کا استعمال کر کے اپنے حق میں مہم چلوائی، اس کا مقصد وہ اپنے مرضی کے نتائج حاصل کرنا اور اپوزیشن کو مکمل طور پر ختم کرنا چاہتے تھے۔

یاد رہے کہ صدر پیوٹن نے رواں سال جنوری میں قوم سے خطاب کے دوران آئینی ترمیم میں تبدیلیاں کرنے کی تجویز پیش کی تھی جسے اپوزیشن جماعتوں نے مسترد کردیا تھا۔ حکومت نے صدر کی تجویز پر ملک بھر میں ریفرنڈم کروانے کافیصلہ کیا۔

ولادیمیر پوتن نے پارلیمنٹ کے اختیارات وسیع کرنے اور روسی حکومت کی شاخوں میں اقتدار کی تقسیم کی پیش کش کی تھی جس کے بعد ایک تاثر یہ سامنے آیا تھا کہ وہ 2024 میں اپنی صدارتی مدت پوری کرنے کے بعد بھی اقتدار میں رہنے کے خواہش مند ہیں۔

خبررساں ادارے کی رپورٹ کے مطابق دو دہائیوں سے برسر اقتدار رہنے والے صدر پوتن سوویت ڈکٹیٹر جوزف اسٹالن کے بعد دوسرے کریملن رہنما ہیں جو ملکی تاریخ میں سب سے طویل عرصے تک اقتدار میں ہیں۔

روس کے صدر ولادیمیر پوتن دلچسپ شخصیت کے مالک ہیں اور سیاست کے ساتھ گھڑ سواری، تیراکی، اور مارشل آرٹس کے فنون میں بھی مہارت رکھتے ہیں۔

کھیل کا میدان ہو یا مارشل آرٹس کا فن ، گھُڑ سواری ہو یا تیراکی، پیانو سے خوبصورت سُریں بکھیرنا ہو یا آواز کا جادو جگانا، روس کے صدر ولادیمیر پوتن ہر میدان میں طبع آزمائی کرتے پائےجاتے ہیں۔

برف پوش وادیوں میں صرف چھٹیوں گزارنا اور مچھلی کا شکار، سائبریا کے یخ بستہ پانیوں میں تیراکی کے جوہر دکھانا بھی ان کا محبوب مشغلہ ہے۔

Courtesy Hum news