لداخ میں چین کے ہاتھوں پسپائی کے بعد بھارت کا پاکستان سے لڑائی کا خدشہ

امریکی جریدے فارن پالیسی میں شائع مضمون میں کہا گیا ہے کہ لداخ میں چین کے ہاتھوں شرمندگی پربھارتی حکومت کوکئی سوالوں کا سامنا ہے، بھارتی وزیراعظم مودی عوام کی دوبارہ حمایت حاصل کرنے کے لئے اپنے روایتی حریف پاکستان سے لڑائی کرسکتے ہیں۔

امریکی جریدے کا کہنا ہے کہ مقبوضہ کشمیرکی خصوصی حیثیت ختم کرنے کے بعد سے پاکستان اوربھارت کے تعلقات تناؤ کا شکار ہیں اور دونوں ممالک نے نے سفارتی عملے میں پچاس فیصدکمی کردی ہے۔

شائع مضمون میں کہا گیا ہے کہ بھارت ہمیشہ معاشی اور دیگراندرونی مسائل اورمقبوضہ کشمیرمیں انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں سے توجہ ہٹانے کے لئے سیزفائرلائن پرکشیدگی بڑھاتا ہے

امریکی جریدے کے مطابق کہ حالیہ برسوں میں پاکستان اورامریکا کے تعلقات مستحکم ہوئے ہیں، پاک امریکا تعلقات میں بہتری کی وجہ پاکستان کا طالبان اور امریکا معاہدے میں کردار ہے جبکہ صدرٹرمپ تین مرتبہ پاکستان اوربھارت کے درمیان کشیدگی کم کرانے کے لئے ثالثی کی پیشکش کرچکے ہیں۔

یاد رہے گذشتہ سال امریکی جریدے کی تحقیق میں کہا گیا تھا پاکستان اوربھارت میں نیوکلئیرجنگ ہوئی توکروڑوں افراد مارے جائیں گے ، ایٹمی جنگ سے کاربن کا اخراج ہوگا اور دھوئیں کا گہرا بادل فضا میں اٹھے گا، جو ایک ہفتے میں پوری دنیا کولپیٹ میں لے لے گا۔

Courtesy ary news urdu