تارا عزرا داؤد ۔عالمی سطح پر انتہائی کامیاب اور قابل پاکستانی بزنس وومن لیڈر

دنیا میں خوشگوار تبدیلی یہ ہے کہ طاقتور خواتین دوسری خواتین کے لیے کھڑی ہو رہی ہیں اور ان کی زندگی میں بہتری اور آسودگی لانے کے لئے اپنے وسائل کو بھرپور انداز سے استعمال کرنے لگی ہیں اور اس سلسلے میں ان کا کردار انتہائی مثبت اور موثر نظر آنے لگا ہے خواتین کو احساس ہو چکا ہے کہ صنفی تفریق کو ختم کرنے کے لیے انہیں خود ہی جدوجہد کرنی ہے خود ایک دوسرے کا سہارا بننا ہے ایک دوسرے کی ہمت افزائی کرنی ہے اور خواتین کو اپنی صلاحیت اور طاقت کو خود ثابت کرنا ہے ۔

پاکستان کی کامیاب بزنس مین لیڈر تارا عذرا داؤد بھی ایسی ہی طاقتور ترین خواتین میں شامل ہیں جو معاشرے میں اپنا گہرا اثر و رسوخ رکھتی ہیں اعلی تعلیم یافتہ اور مضبوط خاندانی پس منظر کی حامل ہیں۔ مس داؤد کا تعلق داؤد فیملی کی تیسری جنریشن سے ہے

اس خاندان کو پاکستان میں انڈسٹریلا ئزیشن کا بانی ہونے کا اعزاز حاصل ہے ۔مس تارہ عذرا داؤد کو مینیجمنٹ ،فائنانس آئل اینڈ گیس سیکٹر ،شرعی قوانین کے حوالے سے وسیع تجربہ ہے اور وہ سماجی بھلائی کے کاموں میں ہمیشہ پیش پیش رہتی ہیں انہیں کارنل یونیورسٹی اور آکسفورڈ یونیورسٹی سے فارغ التحصیل ہونے کا اعزاز حاصل ہے اور وہ ہارورڈ لاء سکول سے اپنی وابستگی پر بھی نازاں ہیں ۔انہوں نے تین سال تک ہارورڈ بزنس اسکول میں سلیکٹ ریزیڈینشل پروگرام کے تحت بھی تعلیم حاصل کی۔……………………………………تارا عزرا داؤد اس وقت داؤد گلوبل فاؤنڈیشن کی صدر اور 786 انویسٹمنٹ لمیٹڈ کی چیف ایگزیکٹو آفیسر ہیں اس کے علاوہ پاکستان اسٹیٹ آئل میں ڈائریکٹر اور پاکستان ریفائنری لمیٹڈ میں بطور ڈائریکٹر کے خدمات انجام دے رہی ہیں ۔…………….اکستان اسٹیٹ آئل میں وہ اڈٹ، ہیومن ریسورس ،اس کے علاوہ انفارمیشن ٹیکنالوجی اور کنوینشن کمیٹیوں کی سربراہی کرتی ہیں یاد رہے کہ یہ پاکستان میں پبلک سیکٹر کا سب سے بڑا ادارہ ہے جس کا سالانہ ٹرن اوور 1.35 ٹریلین یا دوسرے الفاظ میں آٹھ بلین یو ایس ڈالر سے زیادہ ہے ۔انہیں پندرہ مختلف ممالک میں شریعہ میوچل فنڈز پر خطاب کرنے اور فرینچ میوچل فنڈز ایسوسی ایشن کی ایڈوائزری برائے شریعہ اینڈ اسٹرکچر کرنے کا اعزاز بھی حاصل ہے اس کے علاوہ وہ دنیا کے مختلف بین الاقوامی فورمز پر وہ ۔ وو مین اینڈ فنانس اور چلڈرن اینڈ فنانس کے موضوعات پر خطاب کر چکی ہیں ۔انھیں آسٹریا کی یونیورسٹی میں وزیٹنگ پروفیسر کی حیثیت سے لیکچر دینے کا اعزاز بھی حاصل ہے ۔وہ ابھی وہ شریعت فائنینس اور لا پڑھاتی ہیں اور ایل این کے اسٹوڈنٹس کو لیکچر دیتی ہیں ۔

پہلے بھی یہ بات ہو چکی ہے کہ دنیا میں اس بات سے انکار ممکن نہیں کہ پیسہ بڑی طاقت ہے لیکن پیسہ سب کچھ نہیں ہوتا دنیا کی با اثر کامیاب اور شہرت رکھنے والی خواتین نے صرف پیسے کی بنیاد پر اپنی پہچان نہیں بنائی بلکہ

ان خواتین نے خود کو طاقتور بنانے اور اپنی پہچان بنانے میں اپنی ذہانت قابلیت اور صلاحیتوں کا مظاہرہ کیا ہے ۔ماہرین اس بات پر متفق ہیں کہ خواتین اپنا صرف کس طرح اور کتنے مؤثر طریقے سے استعمال کرتی ہیں یہی ان کی کامیابی ہے اور انہیں اس طریقے سے اپنی کامیابیوں کو جانچنا چاہئے کہ کتنے لوگوں کی زندگی پر ان کے اقدامات کی وجہ سے خوشگوار اثرات رونما ہوئے ہیں ہر کام میں صرف دولت ہی معنی نہیں رکھتی بلکہ ذہانت اور صلاحیتوں کا بےپناہ داخل ہوتا ہے جن کی بنیاد پر کوئی انسان کامیابی کی منازل طے کرتا ہے اور زندگی کے نئے سنگ میل عبور کرتا ہے …………………………کیریئر اسی چیز پر بنائیں جو میں چاہتی ہوں ، نہ کہ دوسروں نے بھی میرے لئے جو چاہا۔ اس کا مطلب یہ ہے کہ آپ اس بات کو تسلیم کریں کہ اگر آپ کسی چیز میں بہترین نہیں ہوسکتے ہیں ، تو پھر بھی آپ اپنے اہداف کو حاصل کرسکتے ہیں اگر آپ کا جذبہ اور ڈرائیو ہے۔ اس کا مطلب یہ بھی ہے کہ اپنے آپ کو خیال رکھنا۔ صحت مند غذا کا استعمال اور ان کو برقرار رکھنا ایک اعلی سطحی مقام کے دباؤ کو سنبھالنے میں مدد کے لئے ضروری ہے۔ ……………..”اپنی کوشش میں سب سے بہتر بننے کی کوشش کرو۔ اگر آپ کسی خیراتی ادارے میں حصہ لیتے ہیں تو صرف چندہ نہ دیں۔ اس میں شامل ہوجائیں اور ان لوگوں کے ساتھ وقت گزاریں جن کی سب سے زیادہ ضرورت ہے۔ اندرونی حوصلہ افزائی کی کلید ہے ، کیونکہ اگر آپ اپنے آپ کو آگے نہیں بڑھ رہے ہیں تو ، کون کرے گا؟ اس کے علاوہ ، تبدیلی کو گلے لگائیں۔………………….اپنے وطن اپنی قوم اور اپنے معاشرے کو کچھ لوٹانا ہے اسی جذبے اور شوق کے تحت مس تارا نے خواتین کے لیے پاکستان کے قومی ایوارڈ کا اجراء کیا اور ہزاروں خواتین رہنما اور کاروباری افراد کی ایک تنظیم لیڈیز فنڈ قائم کی جسے عالمی سطح پر بے حد پذیرائی حاصل ہوئی اور اس تنظیم نے شاندار کامیابی حاصل کی ملالہ یوسفزئی کے ساتھ فائرنگ کا شکار ہونے والی دو لڑکیوں شازیہ اور کائنات کو جنھیں باقی دنیا بھول گئی لیکن اس تنظیم نے تعلیمی فنڈز کی فراہمی اور حوصلہ افزائی کے لئے اپنا کردار ادا کیا اس کے علاوہ مسکارا نے فیس بک کے انٹرنیٹ کی شراکت میں اور ورلڈ بینک کے تعاون سے دنیا بھر میں دس لاکھ سے زیادہ مستحق لڑکیوں کی پیشہ ورانہ تربیت کی سہولت کے لیے ایجوکیٹ ایک گرل کی بنیاد بھی رکھی اور عالمی سطح پر اس کے پروگراموں میں شرکت کی اور ان کی صلاحیتوں اور اقدامات کو بین الاقوامی سطح پر سراہا گیا – وینکوور 2017 میں منعقدہ اپنے سالانہ عالمی لیڈرشپ سمٹ میں موجود 3000 ممبروں کو کامیابی اور اثرات کی اپنی ذاتی کہانی سے نمٹنے اور ان کا اشتراک کرنے کے لئے انھیں 5 YPO ممبروں میں سے ایک کے طور پر بھی منتخب کیا گیا تھا۔محترمہ داؤد نے حال ہی میں جرمن قونصلیٹ اور ایل یو ایم ایس اسکول آف مینجمنٹ کے ساتھ شراکت میں براک مرکز کے قیام کے لئے ایل ڈی ای ایس ایف فنڈ ، پاکستان کا پہلا اور واحد خواتین کے انکیوبیشن سینٹر اور کو-ورکنگ اسپیس کا افتتاح کیا ، جس کا افتتاح گورنر سندھ نے کیا۔ یہ COVID-19 کے دوران عملی طور پر کام کر رہا ہے۔ ایک ایسی لڑکی کو تعلیم دیں جس نے حال ہی میں رنگ برداری کے خلاف جنگ کے لئے ایک عالمی مجلس سمٹ منعقد کی تھی – جس میں سے گہری جلد کی رنگین نوجوان خواتین کا سامنا پاکستان میں ہوتا ہے – جو اپنے پارٹنر چینلز کے ذریعہ 30 لاکھ نوجوان خواتین کے لئے قابل رسائی تھی اور اس کی اہلیہ مسز ثمینہ علوی نے کھولی تھیں۔ صدر پاکستان کے
محترمہ داؤد نے اپنے کاروبار کے سلسلے میں پوری دنیا میں بڑے پیمانے پر سفر کیا ہے۔ وہ اپنے مشہور گرل فرائیڈے کالم کے لئے مشہور ہیں ، جو سی ای اوز ، فیصلہ سازوں اور سیاسی رہنماؤں میں ایک پسندیدہ تھا ، اور بہت سارے مشہور فرائیڈے ٹائمز اخبار میں کئی سال تک چلتی رہی۔ پاکستان کی تعمیر و خدمت کے لئے خاندانی وابستگی کی سراسر محنت اور وراثت کی وجہ سے ، محترمہ داؤد کاروباری اور مخیر برادری میں انتہائی قابل احترام ہیں۔……………………مس تارا کی شاندار کامیابیوں محنت جدوجہد اور عالمی سطح پر ان کی خدمات کے اطراف کو دیکھتے ہوئے یہ کہنا پڑتا ہے کہ تمام لڑکیوں کو چاہیے کہ وہ ۔”اپنا شوق اور ایک مشن ڈھونڈیں جس پر آپ یقین کرتی ہیں۔ جب آپ کو ایسا لگتا ہے کہ آپ لوگوں کی زندگیوں میں فرق پیدا کرتی ہیں تو ، یہ نوکری سے کہیں زیادہ ہوجاتا ہے-ہر موقع سے فائدہ اٹھانے کے لئے ‘کبھی نہیں’ کہتے ہیں۔ اس مشورے نے میری خوب خدمت کی ہے۔ تمام مواقع سے فائدہ اٹھائیں اور اپنے راحت زون سے باہر نکلیں۔ ا ‘خدا نے آپ کو دماغ اور زبان دی۔ استعمال کریں iاپنے آپ پر مکمل اعتماد رکھیں-

تحریر ۔ سالک مجید ۔جیوے پاکستان ڈاٹ کام