حملے میں ’را‘ ملوث ہے، ڈی جی رینجرز سندھ

ڈی جی رینجرز سندھ میجر جنرل عمر احمد بخاری کاکہنا ہے کہ پاکستان اسٹاک ایکسچینج پر حملہ کرنے والے دہشت گردوں کی پشت پناہی پر پڑوسی ملک کی خفیہ ایجنسی ’را‘ ملوث ہے۔

رینجرز ہیڈ کوارٹر میں ڈی جی سندھ رینجرز میجر جنرل عمر احمد بخاری اور ایڈیشنل آئی جی کراچی غلام نبی میمن نے مشترکہ پریس کانفرنس کی اور واقعے کی تفصیلات سے متعلق آگاہ کیا۔

ڈی جی رینجرز سندھ میجر جنرل عمر احمد بخاری نے بتایا کہ دہشت گردوں کو اہداف حاصل نہیں کرنے دیئے، وہ پاکستان اسٹاک ایکسچینج کی عمارت میں داخل نہیں ہوسکے، فورسز نے 8 منٹ میں مشترکہ کارروائی کرکے دہشتگردوں کو مارا ہے-انہوں نے کہا کہ آئی آئی چندریگر روڈ پاکستان اسٹاک ایکسچینج بلڈنگ پر صبح 10 بجکر 2 منٹ پر 4 دہشت گرد گاڑی میں سوار ہو کر آئے اور 10 بجکر 10 منٹ پر اس کارروائی کا اختتام ہوگیا ، یعنی قانون نافذ کرنے والوں نے صرف 8 منٹ میں دہشت گردوں کو انجام تک پہنچایا۔

ڈی جی سندھ رینجرز نے بتایا کہ 2 دہشت گردوں کو پہلے پک اٹ پر مار گرایا، مزید آگے پہنچنے والے 2 دہشت گردوں کو اگلے مرحلے میں مار دیا گیا۔

انہوں نے بتایا کہ رینجرز، پولیس اور پرائیویٹ سیکیورٹی گارڈ پر مشتمل سیکیورٹی ونگ نے یہ کارنامہ سرانجام دیا، اگلے 20 منٹ میں تمام کارروائی مکمل کر لی گئی تھی جبکہ دہشت گردوں کا ارادہ لوگوں کو یرغمال بنانا تھا، وہ اپنے ساتھ جدید اسلحہ، لانچر گرنیڈ اور دیگر سامان لائے تھے۔

ڈی جی رینجرز سندھ میجر جنرل عمر احمد بخاری نے بتایا کہ پاکستان کی معروف بلڈنگ پاکستان اسٹاک ایکسچینج کو ٹارگٹ بنانے کا مقصد پاکستان کی خوشحالی کو نقصان پہنچانا تھا، اس دہشت گرد حملے کے باوجود اسٹاک ایکسچینج میں کام جاری رہا بلکہ مثبت رہا۔

کراچی اسٹاک ایکسچینج حملے میں زخمی ہونے والا 53 سالہ سیکیورٹی گارڈ خدا یار ولد شہریار دوران علاج شہید ہوگیا ہے۔

ڈی جی رینجرز سندھ نے بتایا کہ اس واقعے میں رینجرز اور پولیس کی ریپٹ ایکشن فورس نے بروقت کارروائی کی ہے