شادی کے روز دولہا کورونا کا شکار، اسپتال میں تقریب کا انعقاد

مغربی بنگال کے شہر ہورا کے رہائشی 28سالہ سپریو بینرجی کی کورونا وائرس کی وباء پھیلنے سے دو ماہ قبل ایک شادی میں ایک لڑکی سے ملاقات ہوئی تھی اور دونوں کو ایک دوسرے سے محبت ہو گئی۔

اگلے چند ہفتوں میں محبت پروان چڑھی اور دونوں نے گھر والوں کی مخالفت کے باوجود کورٹ میرج کرلی، ان کی شادی کے بعد دونوں کے گھر والے بھی راضی ہو گئے اور ان کی دعوت ولیمہ کا انتظام کرنا شروع کر دیا۔

رپورٹ کے مطابق بینرجی نے شادی سے پہلے ہی کورونا ٹیسٹ کے لیے سیمپل دے رکھا تھا اور اب اس کی رپورٹ آ گئی تھی، دعوت ولیمہ کے روز شام کو پولیس بینر جی کے گھر آئی اور اس کی کورونا وائرس ٹیسٹ کی رپورٹ کے متعلق بتایا۔

رپورٹ میں معلوم ہوا کہ وہ کورونا وائرس میں مبتلا ہے، جس پر اسے فوری طور پر ولیمہ کی تقریب سے مقامی اسپتال پہنچا دیا گیا جہاں اس کا علاج کیا جاتا رہا۔

گزشتہ روز اس کا ٹیسٹ منفی آنے پر اسے اسپتال میں ہی دولہا بنایا گیا اور اس کی دلہن عروسی جوڑے میں اسپتال لائی گئی، وہاں اسپتال کے عملے نے دونوں کو شادی کے تحائف دیئے اور گیت گائے ، عملے سے انہیں اسپتال سے یوں رخصت کیا جیسے ابھی دلہن کی رخصتی ہو رہی ہو۔

واضح رہے کہ بینرجی کا ٹیسٹ مثبت آنے کے بعد اس کی دلہن اور گھر والوں کے بھی ٹیسٹ کیے گئے تاہم وہ خوش قسمتی سے منفی آئے تھے

Courtesy ary news