قربانی کے جانوروں کیلئےایشیاء کی سب سے بڑی مویشی منڈی میں تعمیراتی کام آخری مراحل میں داخل باقاعدہ آغاز 22 جون سے ہوگا

قربانی کے جانوروں کیلئےایشیاء کی سب سے بڑی مویشی منڈی میں تعمیراتی کام آخری مراحل میں داخل باقاعدہ آغاز 22 جون سے ہوگا

ایک ہزار ایکڑ رقبے اور48 بلاکس پر مشتمل مویشی منڈی میں مارشلینگ ایریا،ایڈمنسٹریٹرآفس اورکنٹرول روم 22جون بروز پیر سے اپنا کام شروع کردیں گے،ترجمان یاور رضاچاولہ

منڈی آنےوالےتمام افردکو سینیٹائزر کیاجائےگا،ماسک پہننا لازمی قرار،بچوں اوربوڑھے افراد کا داخلہ ممنوع اور روازنہ کی بنیاد پرجانوروں کی فیومیگیشن بھی کی جائے گی،مویشیوں کی ابھی سے آمد شروع ہوگئی

کراچی (م س)قربانی کیلئےاشیاء کی سب سے بڑی سپرہائی وے مویشی منڈی کا باقاعدہ آغاز22جون سےہونے جاررہاہے ،ماشیلنگ ایریا، ایڈمنسٹریٹرآفس،کنڑول روم ،پارکنگ ایریا،وی وی آئی،وی آئی پی اور جنرل بلاکس کی تیاریاں بھی آخری مراحل داخل ہوچکی ہیں تاہم ابھی سےمویشی منڈی میں پنجاب ،بلوچستان اور سندھ کےدوردراز علاقوں سے جانوروں کی آمد کاسلسلہ بھی شروع ہوچکاہے،گزشتہ روزشیخوپورہ سےپندرہ جانوروں پرمشتمل آنےوالےبیوپاریوں نے بھی اپنا پڑاو ڈال دیاہےانتظامیہ کی جانب سےمویشی منڈی آنے والے بیوپاریوں اورخریداروں کوسینیٹائز اور جانوروں کی فیومیگیشن کی جائے گی ترجمان یاوررضا چاولہ کا کہنا کہ اس بار عیدالضحی کیلئےچھ لاکھ سے زائد جانوروں کی آمد متوقع ہےانہوں منڈی آنےوالے ہرشخص سے اپیل کی ہے کہ وہ موذی وائرس کورونا کے سبب اپنا خیال رکھیں انہوں نے کہا کہ اس بار ہمیں پہلے سے زیادہ احتیاط کی ضرورت ہےانہوں اپیل کی کہ منڈی کا رخ کرنےتمام افراد اپنے اور اپنے بچوں کی زندگی کیلئےماسک پہن کر آئیں ،سماجی فاصلہ اختیار کریں انہوں بتایاکہ منڈی آنے والے تمام داخلی راستوں پرسییٹائزرگیٹ بھی نصب کیے جاررہےجبکہ روزانہ کی بنیاد پرمویشیوں اور بیوپاریوں کی حفاظت کیلئےجراثیم کش اسپرے ہوگااور مفت طبی کیمپ بھی لگائے جاررہے ہیں جہاں جانوروں کابھی چیک اپ کیا جائے گا،ترجمان مویشی منڈی کاکہنا تھاکہ بچے اور بوڑھے افرد منڈی آنے سے گریز کریں