کورونا ٹیسٹنگ گنجائش 110 تک بڑھادی گئی،وزیراعلیٰ سندھ

کورونا ٹیسٹنگ گنجائش 110 تک بڑھادی گئی،وزیراعلیٰ سندھ
کورونا کے 2894 نئے کیسز کی تصدیق، 49 مزید مریضوں کی اموات، مراد علی شاہ
کراچی (19 جون): وزیراعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ نے کہا ہے کہ کارونا وائرس نے گزشتہ 24 گھنٹوں میں مزید 49 افراد کی جان لی اور مزید 2894 افراد کو وائرس نے متاثر کیا۔ کورونا وائرس سے ہونے والی ہلاکتوں کی تعداد 1000 کے اعداد کو عبور کرکے 1013 تک پہنچ گئی ہے اور کوویڈ 19 میں متاثرہ افراد کی تعداد 65163 ہوگئی ہے ۔ یہ بات انہوں نے جمعہ کو وزیراعلیٰ ہاؤس سے جاری ایک بیان میں کہی۔ مراد علی شاہ نے کہا کہ پاکستان میں سب سے زیادہ ایک دن میں 13642 رکارڈ ٹیسٹ کیے گئے جن سے 2894 کیسز کی تشخیص ہوئی ہے اس طرح تصدیق ہونے والی شرح 21.2 فیصد ہے۔ اب تک 354129 ٹیسٹ کئے گئے جن سے 65163 کسیز تشخیص ہوئے ہیں۔ اموات کے بارے میں بات کرتے ہوئے وزیراعلیٰ سندھ نے کہا کہ 49 ایسے مریض ہیں جو وائرس کے خلاف جدوجہد کرتے ہوئے اپنی جانیں گنوا دیں۔ انہوں نے کہا پچھلے 48 گھنٹوں کے اندر ہم کورونا وائرس کی وجہ سے 97 قیمتی جانوں سے ہاتھ دھو بیٹھے ہیں ۔ انہوں نے مزید کہا کہ صورتحال کافی سنگین اور تکلیف دہ ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ اب تک 1013 مریض جان بحق ہوچکے ہیں جن کی شرح اموات 1.55 فیصد ہے۔ وزیراعلیٰ سندھ نے کہا کہ 73 فیصد اموات کموربیٹز کے اور 75 فیصد 50 سال سے زائد عمر کی ہیں۔ وزیراعلیٰ کے مطابق اس وقت 31425 مریض زیر علاج ہیں ان میں سے 29818 گھر وں میں آئسولیٹ، 64 قرنطینہ مراکز اور 1543 مختلف اسپتالوں میں زیر علاج ہیں۔ انہوں نے مزید کہا کہ 673 مریضوں کی حالت تشویشناک ہے ان میں سے 113 کو وینٹیلیٹر لگایا گیا ہے۔ مراد علی شاہ نے بتایا کہ مزید 1691 مریض صحتیاب ہو کر معمول کی زندگی کی جانب رواں دواں ہیں ۔ انہوں نے بتایا کہ اب تک صحتیاب ہونے والے مریضوں کی تعداد 32725 ہوگئی ہے جو 50.3 فیصد بحالی کی شرح ہے۔ ضلعی سطح کے کیسز سے متعلق وزیراعلیٰ سندھ نے کہا کہ 2894 نئے کیسوں میں سے 1626 کا تعلق کراچی سے ہے ان میں ضلع شرقی 471 ، ضلع جنوبی 413 ، ضلع وسطی 255 ، ضلع ملیر 213 ، ضلع کورنگی 150 اور ضلع غربی 124 شامل ہیں۔ انہوں نے بتایا کہ خیرپور میں 164 ، حیدرآباد میں 64 ، جامشورو 62 ، گھوٹکی 45 ، سکھر 30 ، لاڑکانہ 29 ، ٹھٹھہ 26 ، نوشہروفیروز 22 ، سانگھڑ 18 ، شہید بینظیرآباد 17 ، دادو 16 ، شکار پور 9، جیکب آباد اور کشمور میں 7-7، عمرکوٹ ، مٹیاری اور میرپورخاص میں 6-6، بدین ، ٹنڈو الہیار اور ٹنڈو محمد خان میں 3-3، قمبر اور سجاول کے 2-2کیس رپورٹ ہوئے ہیں۔ مراد علی شاہ نے کہا کہ انہوں نے ٹیسٹنگ کی صلاحیت کو بڑھا دیا ہے اور یہ پاکستان میں سب سے زیادہ ہے۔ انہوں نے کہا کہ ہم نے اپنے صحت کے نظام کو مزید مستحکم کرنے کیلئے پوری کوشش کی ہے اور مجھے یقین ہے کہ اس سے صوبے کے عوام کی خدمت ہوگی۔ انہوں نے کہا کہ ہم نے 10 اضلاع میں 20 لیبارٹریز قائم کی ہیں جو ٹیسٹنگ کیلئے دن رات کوشاں ہیں۔ مراد علی شاہ نے کہا ہم نے اپنی ٹیسٹنگ صلاحیت کو 110 گنا بڑھادیا ہے جو خود ایک ریکارڈ اور سندھ کے عوام کے ساتھ اپنی وابستگی کا مظہر ہے۔ مراد علی شاہ نے بتایا کہ کورونا وائرس کے مریضوں کی اسپتالوں میں اندراج کی تعداد میں گزشتہ 22 دن سے 11 گنا اضافہ ہوا ہے۔ انہوں نے یہ بھی مزید کہا کہ گزشتہ 22 دنوں میں نازک مریضوں کی تعداد میں بھی 22 گنا اضافہ ہوا ہے۔ وزیراعلیٰ سندھ نے صحت کی دیکھ بھال کرنے والے عملے کو زبردست خراج تحسین پیش کرتے ہوئے کہا کہ پاکستان بھر میں 46 ڈاکٹرز ، نرسز اور پیرا میڈیکل اسٹاف نے کورونا وائرس کے مریضوں کی خدمت کے دوران اپنی زندگی سے ہاتھ دھو بیٹھے جن میں سے 17 سندھ کے شامل ہیں۔ وبائی مرض کے اس نازک موڑ پر میں بالخصوص سندھ کے عوام کیلئے ان کی بے لوث خدمات کیلئے ان کو سلام پیش کرتا ہوں۔ مراد علی شاہ نے کہا کہ لوگوں کی حفاظت کو مدنظر رکھتے ہوئے صوبے کے مختلف اضلاع کے مختلف علاقوں میں منتخب لاک ڈاؤن لگا دیا گیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ میں صوبے کے لوگوں سے درخواست کروں گا کہ وہ لاک ڈاؤن کو مناسب طور پر نافذ کرنے میں انتظامیہ کے ساتھ تعاون کریں ۔ انہوں نے مزید کہا کہ یہ سب ہمارے لوگوں کی حفاظت کیلئے ہے۔
عبدالرشید چنا
میڈیا کنسلٹنٹ وزیراعلیٰ سندھ