کروناوائرس: بھارت میں بچی علاج کے لیے تڑپتی رہی، والدین دربدر

بھارت کے اسپتال کرونا کے سبب دیگر مریضوں کا داخلہ نہیں کررہے، جس کی وجہ سے عام مریضوں کا کوئی پرسان حال نہیں ہے، ریاست مہاراشٹر کے ضلع اورنگ آباد میں والدین اپنی بیمار بچی کو لے مختلف اسپتالوں میں دربدر کی ٹھوکریں کھاتے رہے۔رپورٹ کے مطابق کسی اسپتال نے 15 سالہ معذور بچی کو داخل نہیں کیا، والدین سرکاری کے علاوہ پرائیوٹ اسپتال بھی گئے لیکن کہیں شنوائی نہ ہوئی۔ اہل خانہ نے اسپتالوں کے خلاف حکومت کو شکایت درج کروا دیا ہےمتاثرہ بچی کے والد نے کہا ہے کہ ان کی بچی کو کوئی مرض لاحق نہیں، وہ ذہنی طور پر معذور ہے اور 4 سے 5 مہینے میں ایک مرتبہ اس کی پیشاب کی تھیلی’گولڈ بلاڈر‘ تبدیل کرنا ہوتی ہے، لیکن اب کوئی اس کا علاج نہیں کررہا۔

والدین کی شکایت پر میونسپل کارپوریشن نے پرائیوٹ اسپتالوں کی اس مجرمانہ روش کا سختی سے نوٹس لے لیا ہے۔

Courtesy ary news