ڈیکسامیتھاسون کورونا کا علاج؟

ڈیکسامیتھاسون کورونا کا علاج؟
ڈیکسامیتھاسون سن 1961 سے میڈیکل فیلڈ میں استعمال ہو رہی ہے۔یہ ایک STEROID ہے۔دمہ سے لے کر جوڑوں کے درد تک اور کئی دوسری بیماریوں میں اس کا استعمال عرصہ دراز سے ہو رہا ہے اور ڈاکٹر سے لے کر ایک عطائی تک اس کے فوائد سے واقف ہے۔اور اکثر طاقت کی بوتلوں میں اس کا استعمال کثرت سے جاری و ساری ہے۔کورونا کے علاج کے متعلق کوئی بھی خبر آتی ہے تو ہم ثواب دارین سمجھ کر شیئر کرتے ہیں۔اس ضمن میں چند اہم نقاط درج ذیل ہیں۔

1۔ پاکستانی ڈاکٹرز اس کی اہمیت سے مکمل طور پر واقف ہیں اور کورونا کے مریضوں میں اس کا استعمال پہلے دن سے کر رہے ہیں۔
2۔یہ کورونا کا علاج نہیں بلکہ وہ لوگ جن کی بیماری شدت اختیار کر جاتی ہے ان کے پھیپھڑوں کی سوزش کم کرنے میں مدد دیتا ہے۔ یہ وہ لوگ ہیں جن کو وینٹیلیٹر یا آکسیجن کے استعمال کی ضرورت پڑتی ہے ان کے علاج میں مدد گار ثابت ہو سکتا ہے۔
3۔کورونا کا مرض شوگر، گردوں اور بلڈ پریشر کے مریضوں میں عام ہے اور اس کے استعمال سے شوگر اور بلڈ پریشر بڑھ جاتا ہے جو بیماری کی شدت کو بڑھا سکتا ہے اس لئے ڈاکٹر کے مشورے کے بغیر استعمال مت کریں۔
4۔کورونا کی بیماری 80 فی صد لوگوں میں معمولی نوعیت کی ہوتی ہے اس لیے بیشتر لوگوں کو اس کے
استعمال کی ضرورت نہیں پڑتی۔
آپ کے ڈاکٹرز اس کی اہمیت اور اس کی افادیت کو جانتے ہیں اور اس ریسرچ سے پہلے ہی اس کا استعمال کر رہے ہیں جان لیں کہ آپ محفوظ ہاتھوں میں ہیں۔(ماخوذ)

اہم ترین بات

اس دوائی کا بے جا استعمال فائدے کی بجائے نقصان کا باعث بن سکتا ہے۔
علاوہ ازیں اس کا بے سبب استعمال مردانہ اور زنانہ بانجھ پن کا باعث بھی بن سکتا ہے (ڈاکٹرفرحت عباس)