وفاقی حکومت نے موجودہ صورت حال کے مطابق ایک متوازن بجٹ پیش کیا ہے – ایس ایم منیر

کورنگی ایسوسی ایشن آف ٹریڈ اینڈ انڈسٹری کے سرپرست اعلیٰ ایس ایم منیر اور صدر شیخ عمر ریحان نے کہا ہے کہ وفاقی حکومت نے موجودہ صورت حال کے مطابق ایک متوازن بجٹ پیش کیا ہے۔ ایس ایم منیر کا کہنا تھا کہ بجٹ میں کوئی نیا ٹیکس نہ لگانا خوش آئند ہے اس کے علاوہ صنعتوں کو مختلف ٹیکس مراعات اور خام مال پر دی گئی ڈیوٹی کی چھوٹ بھی مثبت اقدامات ہیں۔
انہوں نے کہا کہ وزیر اعظم عمران خان نے معاشی سرگرمیاں جاری رکھنے کے لیے مشکل فیصلے کیے جن کی بھرپور حمایت کرتے ہیں امید ہے وہ صنعتوں کو مزید ریلیف دینے کے لیے بھی بڑے فیصلے کریں گے۔ کاٹی کے صدر شیخ عمر ریحان نے کہا کہ بجٹ متوازن ہے تاہم ٹیکس اہداف حقیقت پسندانہ نہیں۔

انہوں نے کہا کہ حکومت نے چھوٹے کاروبار میں کیش فلو برقرار رکھنے کے لیے شناختی کارڈ کی شرط کے لیے رقم کی حد میں اضافہ کیا جو خوش آئند ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ صنعتوں کے لیے سب بڑا ریلیف یہ ہوگا کہ بجلی اور گیس کی قیمتوں میں کمی لائی جائے۔ ان کا کہنا تھا کہ صنعت اور کاروبار کو موجودہ معاشی صورت حال اور بجٹ میں کیے گئے اقدامات کا فائدہ پہنچانے کے لیے حکومت کو شرح سود میں بھی کمی کا فیصلہ جلد کرلیناچاہیے اور اسے کم ازکم 6فیصد پر لانا چاہیے۔ ان کا کہنا تھا کہ ملک میں روزگار کی فراہمی اور معاشی نمو کے لیے پبلک پرائیوٹ سیکٹر کی شراکت داری کو فروغ دینے کی ضرورت ہے، نجی و سرکاری اشتراک سے ایسے کئی منصوبے شروع کیے جاسکتے ہیں جو معاشی عمل کو بھی مستحکم کریں گے اور ان سے عوام کو روزگار بھی ملے گا۔
صدر کاٹی کا مزید کہنا تھا کہ حکومت کو بندش اور مسائل کا شکار ہونے والی صنعتوں کے لیے خصوصی اقدمات کرنا ہوں گے۔ انہوں نے کہا کہ بند ہونے والی اور مالیاتی بحران کا شکار صنعتی یونٹس کا ڈیٹا جمع کیا جائے اور ان کی معاونت کے لیے جامع حکمت عملی ترتیب دی جائے۔ ان کا کہنا تھاکہ حالات چاہے کیسے ہی کیوں نہ ہوں حکومت صنعتی پیداوار کو ہر ممکن سہولت اور مدد فراہم کرکے ملک کو معاشی بحران سے نکال سکتی ہے