صحافی ولی بابر قتل کیس – مرکزی ملزم گرفتار-مزید 4 قتل کیے

کراچی پولیس چیف غلام نبی میمن نے کہا ہے کہ صحافی ولی بابر قتل کیس کے مرکزی ملزم کو گرفتار کرلیا ہے، مرکزی ملزم شیخ محمد کامران نے ولی بابر کو گولی مار کرقتل کیا تھا، وفاقی خفیہ ادارے کی اطلاع پر ملزم کو گرفتار کیا، ملزم نے مزید 4 قتل کیے ہیں۔ انہوں نے پریس کانفرنس میں بتایا کہ ولی بابر جیو ٹی وی کے کرائم رپورٹر تھے۔


ولی بابر کو 13 جنوری 2011ء میں ولی بابر کو سپر مارکیٹ تھانے کی حدود میں نشانہ بنایا گیا۔ صحافی ولی بابر کے قتل کے پانچ گواہان کو قتل کردیا گیا۔ آخری گواہ حیدر جس کی گواہی پر سزا ہوئی، اس کو 12 نومبر2012ء کو قتل کردیا گیا ۔ کیس میں کل 8 ملزمان تھے، ان میں لیاقت نامی ملزم پولیس مقابلے میں مارا گیا تھا۔

ملزمان کو لندن سے ہدایات ملتی تھیں،عدالت نے چار ملزمان کو عمر قید اور 2 سزائے موت سنائی تھی۔

ملزمان شارخ، فیصل محمود، سید طاہر نوید، سید محمد علی رضوی ان کو عمر قید کی سزا ملی ، جبکہ فیصل عرف فیصل موٹا کو سزائے موت سنائی گئی ۔ لیکن ملزم شیخ محمد کامران اپنی جگہ تبدیل کرتا رہا۔ کراچی پولیس چیف غلام نبی میمن نے کہا کہ آج صبح وفاقی خفیہ ادارے کی اطلاع پر اس کو گرفتار کرلیا گیا۔ اس نے ابھی تک چار قتل کیے ہیں، ابھی مزید تفتیش کررہے ہیں، اس بندے نے ولی بابر کو گولی ماری تھی، اسی وجہ سے انسداد دہشتگردی عدالت نے اس کو سزائے موت سنائی تھی۔
مرکزی ملزم سے مزید تفتیش جاری ہے۔ جس کے بعد مزید چیزیں سامنے آئیں گی۔ دوسری جانب وزیراطلاعات سندھ سید ناصر حسین شاہ نے کہا کہ صحافی ولی بابر پر گولی چلانے والا اصل قاتل گرفتارکرلیا گیا۔ ولی بابر کے قاتل کو کیفر کردار تک پہنچایا جائےگا۔ کیس کے مرکزی ملزم کی گرفتاری پر پولیس کو مبارک باد دیتا ہوں۔
urdupoint0report-