پروفیسر ڈاکٹر خالد ایم عراقی ۔پاکستان کا قابل فخر سرمایہ

محبت مجھے ان جوانوں سے ہے
ستاروں پہ جو ڈالتے ہیں کمند

علامہ اقبال کا یہ شعر کراچی یونیورسٹی کے موجودہ وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر خالد محمود عراقی پر پورا اترتا ہے وہ دنیا بھر میں اپنی پہچان اور منفرد مقام رکھنے والی کراچی یونیورسٹی کو نئے سنگ میل طے کرانے اور اپنی اصل منزل کی جانب رواں دواں رکھنے میں اپنا کردار بخوبی نبھا رہے ہیں آج وہ جس اہم منصب پر ہیں اس کے چیلنج کم نہیں ہیں ان کے کندھوں پر ہماری نوجوان نسل کے مستقبل کی بھاری ذمہ داری عائد ہوتی ہے اور وہ اپنی ذمہ داریوں کا بھرپور ادراک رکھتے ہیں قدرت نے انہیں زبردست صلاحیت و قابلیت اور ذہانت عطا کی ہے

وہ بہت محنتی اور مخلص انسان ہیں انہوں نے کراچی یونیورسٹی کی ترقی اور بہتری کے لیے دن رات ایک کر رکھا ہے یہ عادت ان کی وائس چانسلر بننے کے بعد نہیں بلکہ کراچی یونیورسٹی میں پہلا قدم رکھنے کے دن سے نوٹ کی گئی اور اس کی گواہی بے

شمار لوگ دیں گے وہ اپنے ادارے اپنے شہر اپنے ملک اور اپنے لوگوں کے ساتھ شروع دن سے انتہائی مخلص اور وفادار ہیں اور ان کی شدید خواہش اور بھرپور کوشش ہے کی تعلیم کے میدان میں ہمارے نوجوان اور ہمارا ملک دنیا کے ترقی یافتہ لوگوں

اور ملکوں کے ساتھ کھڑا ہوں بلکہ مختلف شعبوں میں ہم دنیا کی رہنمائی کرنے کے قابل ہو ں۔

پروفیسر ڈاکٹر خالد محمود عراقی سے زیادہ کراچی یونیورسٹی کو کون بہتر جانتا ہے وہ خود یہیں سے فارغ التحصیل ہیں انہوں نے انیس سو نواسی میں پولیٹیکل سائنس میں ماسٹرز کیا اور بعد ازاں پبلک ایڈمنسٹریشن میں پی ایچ ڈی اعزاز حاصل کیا


۔پبلک پالیسی ،ڈویلپمنٹ اسٹڈیز اور پبلک ریلیشنز ان کے خاص دلچسپی اور مہارت کے شعبے ہیں ۔کراچی یونیورسٹی میں وائس چانسلر کے اعلیٰ ترین عہدے تک پہنچنے سے پہلے انہوں نے متعدد دیگر اہم عہدوں پر اپنے فرائض خوش اسلوبی سے انجام دیے وہ فیکلٹی آف مینجمنٹ اینڈایڈمنسٹریٹیوسائنسز کے ڈین رہے ۔ڈائریکٹر آف ایڈمیشنز ،اس کے


علاوہ وائس چانسلر کے ایڈوائزر برائے کیمپس سیکیورٹی افیئرز اینڈ سٹوڈنٹ کی حیثیت سے بھی


انہوں نے شاندار خدمات انجام دیں انہیں انیس سو نوے میں کراچی یونیورسٹی میں لیکچر ر کی حیثیت سے اپنی صلاحیتوں کے اظہار کا موقع ملا اس کے بعد وہ انیس سو اٹھانوے میں اسسٹنٹ پروفیسر اور سال 2009 میں پروفیسر بن گئے


۔اس کے علاوہ وہ ہمدرد یونیورسٹی ،اور یونیورسٹی آف بلوچستان کوئٹہ ،یونیورسٹی آف مینجمنٹ اینڈ ٹیکنالوجی لاہور ،پاکستان اسٹڈی سینٹر ،یونیورسٹی آف سندھ اور


این ای ڈی یونیورسٹی میں وزٹنگ فیکلٹی کے طور پر پڑھاتے رہے ہیں وہ ایک کتاب کے مشترکہ مصنف اور چالیس پیپرز سے زیادہ آرٹیکلز کے مصنف ہیں ۔

پروفیسر ڈاکٹر خالد محمود عراقی ذاتی طور پر ایک سادہ اور خوش مزاج انسان ہیں ان کا مطالعہ اور تجربہ بہت وسیع ہے

مشاہدہ اور حافظہ زبردست ہے علمی شعبہ میں وہ بین الاقوامی پہچان رکھنے والی شخصیت کے حامل ہیں خوش گفتار خوش لباس اور زندہ دل طبیعت کے مالک ہیں ۔انہیں مختلف ملکوں کا سفر کرنے اور متعدد عالمی کانفرنسوں میں پاکستان کی نمائندگی کرنے

کا اعزاز حاصل ہے اب ان کے شاگرد بھی دنیا بھر میں پھیلے ہوئے ہیں مختلف شعبہ ہائے زندگی سے تعلق رکھنے والی سرکردہ شخصیات ان کے حلقہ احباب میں شامل ہیں ملکی اور بین الاقوامی سطح پر ان کا نام نہایت عزت اور احترام سے لیا جاتا ہے

۔انہیں پاکستان کے نوجوانوں پر بھرپور اعتماد ہے وہ پورے یقین کے ساتھ یہ بات کہتے ہیں کہ مملکت خداداد پاکستان کو قدرت نے بے پناہ نعمتیں اور خزانے عطا کیے ہیں ہمارے لوگوں میں زبردست صلاحیتیں ہیں ہمارے لوگ اور ہمارا ملک بہت ترقی کرے گا

ذرا نم ہو تو یہ مٹی بڑی زرخیز ہے ساقی
—-
Salik-Majeed-for-jeeveypakistan.com