فون پر شہریوں سے اربوں روپے لوٹنے والے 16 ملزمان گرفتار

فون پر شہریوں سے اربوں روپے لوٹنے والے 16 ملزمان گرفتار

وفاقی تحقیقاتی ادارے ایف آئی اے کے سائبر کرائم ونگ نے کاروائیاں کرکے اسٹیٹ بینک کے نمائندے بن کر سادہ لوح شہریوں سے جعل سازی کے ذریعے لاکھوں روپے لوٹنے والے گروہوں کے 17 ملزمان کو گرفتار کر لیا ہے۔ ملزمان کے قبضے سے 5 ہزار سے زائد موبائل فون سمز، بی وی ایس ڈیوائسز حقیقت جدید آلات برآمد ہوئے ہیں۔ ملزمان کا نیٹ ورک پورے پاکستان میں پھیلا ہوا تھا۔ گرفتار ملزمان


جیتو پاکستان اور دیگر اسکیموں کے نام سے فون کالز کرتے تھے اور بینکوں کا ڈیٹا حاصل کرکے اکاونٹ ہولڈرز کو جعلی فون کالز کرتے تھے۔ فون کالز کے ذریعے شہریوں کو کروڑوں روپے کا چونا لگا چکے ہیں۔ ملزمان کبھی ایزی لوڈ کے ذریعے کبھی اے ٹی ایم کارڈز ہیک کرکے بڑے پیمانے پر رقم ہتھیا لیتے تھے۔ ایڈیشنل ڈائریکٹر سائبرکرائم سندھ کون فیض اللہ کور او اور دیگر افسران میں اس سلسلے میں ایک فریق اس میں تفصیلات بتائیں اور ملزمان سے برآمد سامان کا میڈیا کو معائنہ کرایا۔ انہوں نے بتایا کہ ایف آئی اے موبائل کمپنیز کے متعلقہ اہلکاروں کو

بھی شامل تفتیش کرنے پر غور کر رہی ہے۔ ملزمان میں اسٹیٹ بینک کے نمائندے بن کر فون کال کرنے والے، موبائل سم کارڈ ایکٹیویٹ کرنے والے اور انگوٹھوں کے نشان بنانے والے ماہر ملزماب بھی شامل ہیں، فیض اللہ کوریجو کے مطابق فیڈرل انویسٹی گیشن ایجنسی اور حساس اداروں نے پنجاب کے مختلف شہروں اور دیہاتوں میں بھی کاروائیاں کی ہیں۔
ایف آئی اے حکام کے مطابق ملزمان کے گروہ گوجرہ، ٹوبہ ٹیک سنگھ، پنڈی بھٹیاں، حافظ آباد، گوجرانوالہ، فیصل آباد، خیرپورٹامیوالی، بہاولپور، وہاڑی اور ملتان سے گرفتار کیے گئے ہیں۔