6 سرکاری اسپتالوں کو 500 آئی سی یو اور ایچ ڈی یو بسترے فراہم کئے گئے ہیں، وزیراعلیٰ سندھ

6 سرکاری اسپتالوں کو 500 آئی سی یو اور ایچ ڈی یو بسترے فراہم کئے گئے ہیں، وزیراعلیٰ سندھ
کوویڈ 19 کے 2428 نئے کیسز کی تشخیص، مزید 17 مریض جان بحق ہوگئے، سید مراد علی شاہ
کراچی (12 جون): کورونا وائرس کے 11356 ٹیسٹوں کے نتیجے میں 2428 نئے کیسز سامنے آئے جبکہ 17 مزید مریضوں کی اموات کے بعد ہلاکتوں کی تعداد 793 ہوگئی ہے۔یہ بات وزیراعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ نے وزیراعلیٰ ہاؤس سے جاری ایک بیان میں کہی۔ انہوں نے کہا کہ صوبے میں گزشتہ 24 گھنٹوں میں اب تک پاکستان میں ایک دن میں سب سے زیادہ 11356 ٹیسٹ کئے گئے جس سے 2428 نئے کیسز کی تشخیص ہوئی جوکہ مثبت نتائج کا 22 فیصد بنتا ہے۔ انہوں نے بتایا کہ اب تک 227054 ٹیسٹ کئے گئے ہیں جس سے 49256 کیسز ظاہر ہوئے جو مثبت نتائج کا 18 فیصد بنتے ہیں۔ مراد علی شاہ نے کہا کہ اب سندھ میں کورونا وائرس سے 793 اموات ہوئی ہیں جن میں سے 17 افراد کی گذشتہ 24 گھنٹوں کے دوران رپورٹ ہوئی ہے جس کے بعد اموات کی شرح 1.6 فیصد ریکارڈ کی گئی ہے۔ وزیراعلیٰ کے مطابق کورونا وائرس کے 25350 مریض زیر علاج ہیں ان میں سے 23615 گھروں میں، 79 قرنطینہ مراکز میں اور 1656 مختلف اسپتالوں میں زیر علاج ہیں۔ انہوں نے کہا مجھے یہ بتاتے ہوئے افسوس ہو رہا ہے کہ 530 مریضوں کی حالت تشویشناک ہے ان میں سے 83 کو وینٹیلیٹرز پر منتقل کیا گیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ 1066 مزید مریضوں کو صحتیابی کے بعد انھیں اپنے گھروں کی جانب رخصت کیا گیا جس کے بعد کورونا وائرس سے صحتیاب ہونے والے مریضوں کی تعداد 23113 ہوگئی ہے جوکہ 47 فیصد بحالی کی شرح ظاہر کرتی ہے۔ وزیر اعلیٰ سندھ نے کہا کہ کورونا وائرس کے 2428 کیسوں میں سے 1641 کا تعلق کراچی سے ہے ان میں ضلع شرقی 571 ،ضلع جنوبی 351 ، ضلع وسطی 265 ، ضلع غربی 207 ، ضلع ملیر 176 اور ضلع کورنگی کے 125 شامل ہیں۔ انہوں نے مزید کہا کہ کراچی ملک کا ایک گنجان آباد شہر ہونے کے ناطے سب سے زیادہ متاثر ہوا ہے لہٰذا اس شہر کے لوگوں کو اضافی احتیاطی تدابیر اپنانا ہوں گی۔ مراد علی شاہ نے صوبے کے دیگر اضلاع سے متعلق بتایا کہ گھوٹکی میں 66 ، حیدرآباد میں 64 ، سکھر 47 ، خیرپور 38 ، لاڑکانہ 31 ، جیکب آباد 26 ، دادو 20 ، نواب شاہ اور سانگھڑ میں 17-17 ، جامشورو 14 ، قمبر 9، کشمور ، میرپورخاص اور ٹھٹھہ 7-7، ٹنڈو محمد خان 3اور عمرکوٹ میں 2 نئے کیسز رپورٹ ہوئے ہیں۔ وزیر اعلیٰ سندھ نے کہا کہ کورونا وائرس نے گھوٹکی ، حیدرآباد، سکھر ، خیرپور اور لاڑکانہ کو بھی بری طرح متاثر کیا ہے۔ انہوں نے کہا یہ تمام تر کیسز مقامی ٹرانسمیشن کے ہیں اور اس کو اہل علاقہ کے لوگوں کی حمایت سے روکا جاسکتا ہے بصورت دیگر اس پر قابو پانا کافی مشکل ہوگا۔ انہوں نے سندھ کے عوام پر زور دیا کہ وہ ایس او پیز اپنائیں ، ماسک پہنیں اور معاشرتی اجتماع سے اجتناب کریں۔
صحت سے متعلق اجلاس:
وزیراعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ نے اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے 500 آکسیجن بستروں کو تقسیم کرنے کا فیصلہ کیا ہے جس میں شہر کے 6مختلف سرکاری اسپتالوں کے 72 آئی سی یو اور 428 ایچ ڈی یو شامل ہیں۔ اجلاس میں وزیر صحت ، چیف سیکرٹری ، وزیراعلیٰ سندھ کے پرنسپل سیکریٹری، سیکرٹری خزانہ ، سیکرٹری صحت ، کور 5 کے بریگیڈیئر سمیع ، ڈاکٹر باری اور دیگر نے شرکت کی۔ وزیراعلیٰ سندھ نے کہا کہ شہر کے مختلف علاقوں میں تمام سرکاری اسپتال میں آئی سی یو اور ایچ ڈی یو وارڈز ہونے چاہئیں۔ محکمہ صحت اور دیگر ماہرین کی مشاورت سے وزیراعلیٰ سندھ نے سندھ گورنمنٹ اسپتال ، کورنگی نمبر 5 کیلئے 16 آئی سی یو بیڈ اور 64 ایچ ڈی یو فراہم کرنے ، قطر اسپتال ،اورنگی کیلئے 20 آئی سی یو اور 55 ایچ ڈی یو بسترے، سندھ گورنمنٹ اسپتال، لیاقت آباد کیلئے 18 آئی سی یو اور 57 ایچ ڈی یو بسترے، سندھ گورنمنٹ ہسپتال، کراچی کیلئے 10 آئی سی یو اور 65 ایچ ڈی یو بسترے،50 بستروں پر مشتمل اسپتال مالاکنڈ میٹروویل کیلئے 8 آئی سی یو اور 34 ایچ ڈی یو بستر ے، عباسی شہید اسپتال کیلئے 100 ایچ ڈی یو بسترےاور بفر اسٹاک کیلئے 53 ایچ ڈی یو بسترے دینے کی منظوری دی۔ مراد علی شاہ نے فیلڈ آئسولیشن سیٹر، ایکسپو کیلئے ضروری سازوسامان فراہم کرنے کی بھی ہدایت کی۔ واضح رہے کہ یہ 500 بسترے نیشنل ڈیزاسٹر مینجمنٹ اتھارٹی (این ڈی ایم اے) نے حکومت سندھ کو فراہم کیے ہیں۔
عبدالرشید چنا
میڈیا کنسلٹنٹ وزیراعلیٰ سندھ