ٹیسٹ کرکٹ کی شرٹ میں بڑی تبدیلی

کورونا وائرس کے باعث معیشت کو لگنے والے شدید دھچکے نے کرکٹ کھیلنے والے ممالک کو بھی متاثر کردیا، ان ممالک کی آمدنی کو سہارا دینے کے لیے آئی سی سی نے حل کے طور پر کھلاڑیوں کی ٹیسٹ شرٹس پر کمرشل لوگو کی اجازت دے دی۔

کورونا کے باعث کرکٹ کھیلنے والے ممالک بھی کروڑوں کے پھیرے میں آگئے، نقصان کیسے پورا کیا جائے اور کٹھن معاشی حالات میں آمدنی کیسے بڑھائی جائے؟ ان مشکلات کو مدنظر رکھتے ہوئے انٹرنیشنل کرکٹ کونسل نے ٹیسٹ کرکٹ کی سفید شرٹ پر لوگو لگانے کی اجازت دے دی ہے۔

یہ ٹیسٹ کرکٹ کی روایت توڑنے والی بات ہے مگر مخصوص حالات میں دیگر اداروں کی طرح کرکٹ کے عالمی نگراں ادارے نے بھی غیر معمولی اقدامات اٹھائے ہیں۔

اب کھلاڑی کے سینے پر 32 اسکوئر انچ کا لوگو تشہیر کے لیے لگایا جائے گا گزشتہ سال ٹیسٹ کی شرٹس کے پیچھے نمبر اور نام کا تجربہ کیا گیا تھا۔

بعض سابق کرکٹرز اور اس کھیل سے وابستہ دیگر حلقوں نے کھلاڑیوں کو تشہیری بورڈ بنانے پر آئی سی سی کے فیصلے کو سخت تنقید کا نشانہ بنایا ہے۔

اس سے قبل آئی سی سی نے کورونا وائرس کے سبب کھیل میں نئی تبدیلیوں کی منظوری دیتے ہوئے تھوک کے استعمال پر پابندی عائد کردی تھی۔

اگر ٹیم کی جانب سے مستقل یہ غلطی دہرائی گئی تو ہر اننگز میں دو مرتبہ ٹیم کو وارننگ جاری کی جائے گی لیکن غلطی دہرانے پر پینالٹی عائد کر کے 5 رنز بیٹنگ ٹیم کو دے دیے جائیں گے۔

آئی سی سی کے مطابق اس کے علاوہ ٹیسٹ اننگز میں دو کے بجائے تین بار امپائر کے فیصلے کو بریویو کیا جاسکے گا۔ سفری پابندیوں کی وجہ سے ٹیسٹ میچوں میں نان نیوٹرل امپائرز بھی امپائرنگ کریں گے