کل یہ سوچ کر آیئے گا کہ ججوں کی جاسوسی پر ایک حکومت گھر بھی بھیجی جا چکی ہے

آج کی دو خبریں:
۱۔ فائزعیسیٰ ریفرنس میں ججوں نے فروغ نسیم کے سارے دلائل سننے کے بعد آخر میں ان سے کہا کہ کل یہ سوچ کر آیئے گا کہ ججوں کی جاسوسی پر ایک حکومت گھر بھی بھیجی جا چکی ہے۔
۲۔ چیف جسٹس پشاور ہائیکورٹ، وقار احمد سیٹھ (مشرف فیصلہ فیم) نے سپریم جوڈیشنل کونسل میں درخواست دائر کر دی کہ میرٹ اورصلاحیت کے باوجود انہیں نظرانداز کر کے تین دوسرے ہائیکورٹ ججوں کی سپریم کورٹ میں تعیناتی سے میری حق تلفی ہوئی ہے۔