سچے رشتے

سچے رشتے💕
ہر شخص کی زندگی میں سچے رشتوں کی نوعیت مختلف ہوتی ہے, جن رشتوں کی طرف ماں کا رجحان زیادہ ہو گا بچے بھی انہی کی طرف مائل ہوں گے, یعنی ایک ماں ایک عورت ہی آنے والی نسل کو سچے رشتوں کی پہچان کرواتی ہے, رشتہ کوئی بھی ہو ہر ایک کی اپنی جگہ, اہمیت اور شناخت ہوتی ہے.
خود کو کمزور اور مظلوم کہنے والی عورت ہی تو نسل پروان چڑھاتی ہے,یہ بہت طاقتور ہے, ہمارے معاشرے میں شریکا داری کا رواج ہے, عورت کی نظر میں اس کے بچوں کے اصل رشتہ دار اسکے اپنے بہن بھائی ہیں, اور شوہر کے بھائی بہنیں شریکوں کی لسٹ میں آتے ہیں, یہ سب سے بڑی بد دیانتی اور نمک حرامی ہے, باپ تو صرف کما کے لاتا ہے, بچوں کی تربیت اور رشتوں کی پہچان ماں کرواتی ہے, بلکہ باپ کی پہچان اور محبت بھی ماں ہی پیدا کرتی ہے, ہمارے بچوں کی اصل پہچان ان کے باپ کے نام سے ہوتی ہے, باپ کی نسل سے ہوتی ہے پھر اسی نسل سے شریکا داری کیوں؟ اگر باپ ایک سے زیادہ شادی کر لے تو اسی باپ کی اولاد کو ایک دوسرے کا دشمن بنا دیا جاتا ہے, عورت اپنے اندر موجود دوسروں کیلئے نفرت کو اپنے بچوں میں منتقل کر دیتی ہے اس سے بڑی دشمنی اور کیا ہو گی کہ وہ اپنے بچوں کے سچے رشتوں کو انکا دشمن بنا کر پیش کرتی ہے, ایک ہی باپ کی اولاد بہن بھائی کیوں نہیں ہو سکتے ایک دوسرے کے دشمن ہی کیوں,,, اگر ماں کے بھائی ماموں پیار کا رشتہ ہو سکتے ہیں تو باپ کے بھائی شریک کیوں,, اپنے بچوں کو سب رشتے جینے دیں, دنیا سے جاتے ہوئے انکو انکے سچے رشتوں کے بیچ چھوڑ کے جائیں, دشمنوں اور شریکوں کے بیچ نہیں,,,,,

آذان علی