پٹرول پمپس پرلمبی قطاریں، زبردستی ہائی اوکٹین فروخت-) ملتان شہر اور مضافاتی علاقوں میں پٹرول کے حصول کے لیے شہری مسلسل قطاروں میں لگ کر پٹرول خریدنے پر مجبور

ملتان شہر اور مضافاتی علاقوں میں پٹرول کے حصول کے لیے شہری مسلسل قطاروں میں لگ کر پٹرول خریدنے پر مجبور ہیں اور ۔ پٹرول پمپس مالکان کاکہنا ہے کہ گزشتہ 2 روز سے پٹرول کی سپلائی نہیں دی جارہی جبکہ شدید گرمی میں شہر کے بڑے پٹرول پمپ کلمہ چوک پر درجنوں گاڑیاں اور موٹرسائیکل سوار دھوپ میں بھی پٹرول ملنے کا انتظارکرتے رہے۔

ضلعی انتظامیہ نے گزشتہ روز پٹرول کی قلت کا جائزہ لینے اور مہنگے داموں فروخت کرنے پر بعض پمپس کو جرمانہ بھی کیا تاہم ضلعی انتظامیہ کی کارروائیوں کے بعد پٹرول کی قلت پہلے سے بھی زیادہ ہوچکی ہے۔ کلمہ چوک پی ایس او پمپ کے علاوہ شہر اور مضافاتی علاقوں میں دیگر کمپنیوں کے پٹرول پمپس پر موجود شہریوں نے بتایا کہ پمپ پر موجود سیلز مین ہائی اوکٹین خریدنے پر مجبور کررہے ہیں جس کی قیمت فی لیٹر ریگولر پٹرول سے 40سے 50روپے زیاد ہے جبکہ یہ بھی نہیں معلوم کہ وہ ہائی اوکٹین پٹرول ہے بھی یانہیں۔
انہوں نے کہاکہ پٹرول کی قیمتیں بڑھنے پر اعلان ہوتے ہی ریٹس بڑھا دیئے جاتے ہیں جبکہ ریٹس میں کمی کے بعد عوام خوار ہو رہے ہیں اگر پٹرول کمپنیوں کے خلاف کارروائی کی جاتی تو آج ہر پٹرول پمپ پر پٹرول ملنا شروع ہوجاتا۔