کورونا کوشکست دے دی

نیوزی لینڈ کی وزارت صحت کا کہنا ہے کہ ملک میں کورونا کی روک تھام کے لیے دنیا کا سب سے سخت لاک ڈاؤن نافذ کیا گیا جس کی وجہ سے ملک میں کئی دنوں سے کورونا کاکوئی کیس رپورٹ نہیں ہوا۔نیوزی لینڈ میں کورونا کا آخری کیس 22 مئی کو رپورٹ کیا گیا تھا۔
نیوزی لینڈ کی وزیراعظم جیسنڈا آرڈرن نے ملک میں کورونا کی روک تھام کے لیے نافذ کی جانے والی پابندیوں کو آج رات سے مکمل طور پر ختم کرنے کا اعلان کیا۔ان کا کہناتھا کہ نیوزی لینڈ میں کورونا کی روک تھام کے لیے 75 روز قبل سخت لاک ڈاؤن نافذ کیا گیا تھا لیکن اب عالمگیر وبا کے درمیان ملک میں زندگی عام معمولات کی طرح محسوس ہورہی ہے۔
وزیراعظم جیسنڈا نے اعلان کیا کہ آج کابینہ کی اجازت کے بعد ملک کو لیول ون کی طرف لے جارہے ہیں۔ کورونا کے چیلنج سے نمٹنے کے لیے اس دوران بین الاقوامی سرحدیں بند رہیں گی۔ وزیراعظم نےمزید کہا کہ اس بات سے کسی کو انکار نہیں کہ ہم نے ایک سنگ میل عبور کیا ہے جس کے لیے عوام کی شکر گزار ہوں۔ان کا کہنا تھاکہ پابندیوں میں نرمی ، نیوزی لینڈ کی معیشت میں مددگار ثابت ہوگی۔ اب ہم معاشی بحالی کا آغاز کر رہے ہیں ۔
واضح رہے کہ نیوزی لینڈ میں کورونا وائرس کے کل 1504 کیسز رپورٹ ہوئے جبکہ 22 افراد جان کی بازی ہار گئے ۔

Courtesy Gnn News