مسلہ کشمیر پاکستان حکومت کی نا اہلی اور عالمی برادری کی مجرمانہ خاموشی اور غفلت کے باعث آج تک حل نہیں ہو سکا

کراچی
مسلہ کشمیر پاکستان حکومت کی نا اہلی اور عالمی برادری کی مجرمانہ خاموشی اور غفلت کے باعث آج تک حل نہیں ہو سکا جبکہ بھارت دس لاکھ سے زائد فوج کے مقبوضہ کشمیر میں ریاستی دہشت کی ہر روز ایک نئی تاریخ رقم کر رہاہے ان خیالات کا اظہار


پاکستان پیپلزپارٹی اےجے کےسندھ کے مرکزی رہنما محمد مقبول چوہدری نے گزشتہ دنوں پی ٹی وی نیشنل پر کرنٹ افیئرز شو میں میزبان معروف اینکر اور سینئر صحافی میاں طارق جاوید کے سوالات پر جواب دیتے ہوئے کیا
محمد مقبول چوہدری نےکہا کہ 73:سال ہو گیے اقوام متحدہ کی نااہلی کی وجہ سے کشمیری آج بھی بھارتی ریاستی دہشت گردی کا شکار ہیں آج بھی دس لاکھ سے زائد بھارتی فوج کا مقابلہ نہتے کر رہےہیں 5 اگست 2019 سے شروع ہو نے

والی بھارتی ریاستی دہشت گردی آج بھی پورے عروج پر ہے لاک ڈون اور کرفیو کی وجہ سے کشمیری عوام خوراک اور ادویات تک سےمحروم ہیں اب جب کرونا وائرس کے باعث پوری دنیا میں لاک ڈون ہے اب تو

عالمی برادری کو کشمیریوں پر ہونے والے مظالم کا ادراک ہو جانا چاہیے، محمد مقبول چوہدری نےایک سوال کے جواب میں کہا ہے کہ حکمرانوں کو ہوش کے ناخن لینا ہو نگے اب جب پورے ملک میں کرونا وائرس کے باعث افراتفری ہے بھارت آئے روز لائن آف کنٹرول کی خلاف ورزیاں کر رہا ہے مقبوضہ کشمیر میں بھارت ریاستی دہشت گردی کو چھپانے کیلئے کوئی نیا ایڈونچر کرنےکا منصوبہ بنا رہا ہے حکومت ملک میں انتشار کی بجائےاتحاد کو فروغ دینے کی کوشش کرے ، محمد مقبول چوہدری نے کہا کہ کشمیر پاکستان کی شہ رگ ہے جس پر قوم کوئی سمجھوتا نہیں کرسکتی،انھوں نے کہا کہ مقبوضہ کشمیر میں پوری حریت قیادت قید کے باوجود متحد ہے اور کشمیر کی آزادی کی جنگ خبریں تک ایک بھی کشمیری زندہ ہے جاری رکھیں گے، محمد مقبول چوہدری نے کہا کہ وزارت خارجہ کو جنگی بنیادوں پر اقوام متحدہ سمیت تمام عالمی فورمز پر کشمیر کا مقدمہ جارحانہ انداز میں پیش کرنا ہو گا اور اس کے ساتھ ساتھ عالمی میڈیا میں بھارتی ریاستی دہشت گردی کو اجاگر کرنا ہو گا