زرعی مالی پیکیج کے کامیاب نفاذ کے لئے وزارت قومی غذائی تحظ ہر سطح پر صوبائی حکومتوں کے ساتھ تعاون کرے گی

وفاقی وزیر برائے قومی غذائی تحفظ ،سید فخر امام

سید فخر امام کی زرعی مالی پیکیج سے متعلق اجلاس کی صدارت صوبائی زراعت سیکرٹریوں کے ساتھ تبادلہ خیال

وفاقی وزیر نے نفاذ کے طریقہ کار کے لئے صوبائی سیکرٹریوں سے اہم امور کا تبادلہ خیال ھوا

زرعی مالی پیکیج کے کامیاب نفاذ کے لئے وزارت قومی غذائی تحظ ہر سطح پر صوبائی حکومتوں کے ساتھ تعاون کرے گی

پیکج کے تحت کسانوں کوکھاد پر سبسڈی دی جائے گا

زرعی قرضوں پرشرح سود میں کمی لائی جائے گی

کاٹن سیڈز اور سفید مکھی کے خاتمے کیلئے کیڑے مار ادویات کی خریداری اورمقامی طور پر تیار کردہ ٹریکٹروں پرسیلز ٹیکس میں سبسڈی پیکج کا حصہ ھو گی

کسانوں کو کھادوں کی خریداری پر37 ارب روپے کی سبسڈی دی جائے گی

زرعی پیکج کے تحت زرعی قرضوں پر مارک اپ میں کمی کیلئے 8.8 ارب روپے مختص ھوں گے

کاٹن سیڈز وسفید مکھی کے خاتمے کیلئے کیڑے مارادویات پر سبسڈی کے ضمن میں بالترتیب 6 ارب اور 2.5 ارب روپے مختص کیے جانے گے ۔۔،۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

اس بات کا یقینی بنایا جاۓ کہ پیکیج کے اصل مستفید حقیقی کسان ہیں

وفاقی سیکرٹری برائے قومی غذائی تحفظ نے بھی تمام صوبائی سکریٹریوں سے عملدرامد کی تجاویز جلد از جلد مکمل کرنے کو کہا تاکہ کاشتکاروں کو فائدہ پہنچایا جاسکے۔