واجد خان چلے گئے اور باتیں ادھوری رہ گئیں، عدنان صدیقی

پاکستان شوبز انڈسٹری کے معروف اداکار عدنان صدیقی نے بھارتی میوزک کمپوزر واجد خان کے انتقال پر دُکھ کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ ’واجد خان چلے گئے اور باتیں ادھوری رہ گئیں۔‘

فوٹو اور ویڈیو شیئرنگ ایپ انسٹاگرام پر عدنان صدیقی نے واجد خان اور ان کے بھائی ساجد خان کی یادگار تصویر شیئرکرتے ہوئے واجد خان کے لیے اپنا ایک پیغام جاری کیا
عدنان صدیقی نے کہا کہ ’2020 میرے لیے ذاتی طور پر ایک نقصان دہ سال ثابت ہوا ہے کیونکہ میں نے اپنے دوست اور بھائی واجد خان کو کھو دیا ہے۔‘

اداکار نے کہا کہ ’واجد خان چلے گئے اور ہماری بہت سی باتیں ادھوری رہ گئیں۔
اُنہوں نے ماضی کے قیمتی لمحات کو یاد کرتے ہوئے کہا کہ ’مجھے یاد ہے جب میں ممبئی گیا تھا تو ساجد اور واجد بھائی نے مجھے سحری کروائی تھی اور اپنی والدہ کے ہاتھ کی پکی نہاری بھی کھلائی تھی۔‘

عدنان صدیقی نے کہا کہ ’اُس دوران ہمارا دوستی کا مضبوط رشتہ بن گیا تھا اور جب میں واپس پاکستان آیا تھا تو میں نے کہا تھا کہ ہم دوبارہ ضرور ملیں گے لیکن آج واجد بھائی اِس دُنیا سے چلے گئے۔‘
اداکار نے کہا کہ ’میں ہفتے کے اختتام پر لازمی واجد اور ساجد بھائی سے بات چیت کرتا تھا لیکن اِس بار واجد بھائی نہیں ہوں گے۔‘

اُنہوں نے واجد خان کے لیے دُعائے مغفرت کرتے ہوئے کہا کہ ’آپ کی روح کو سکون ملے اور میں ہمیشہ آپ کو گانا گاتے ہوئے یاد کروں گا۔‘

یاد رہے کہ واجد خان طویل عرصے سے گردوں کے مرض میں مبتلا تھے، وہ کچھ دنوں سے اسپتال میں زیر علاج تھے جہاں ان کی طبیعت زیادہ بگڑ گئی تھی
واجد خان کی طبیعت ذیادہ خراب ہونے کی وجہ سے پچھلے چار دنوں سے وہ وینٹی لیٹر پر تھے