پی آئی اے طیارہ حادثے میں معجزانہ طور پر بچ جانے والے ظفر مسعود کے والد نامور اداکار منور سعید کی خصوصی بات چیت

پاکستان کے مشہور اداکار منور سعید اور ان کا پورا خاندان پی آئی اے کے طیارہ حادثے میں معجزانہ طور پر بچ جانے والے پنجاب بینک کے صدر ظفر مسعود کے خیریت سے گھر واپس آ جانے پر اللہ تعالی کے حضور سجدہ ریز ہیں

اور پل پل شکر ادا کر رہے ہیں کہ ان کا بیٹا خیر خیریت سے گھر پہنچ گیا ۔اداکار منور سعید نے بتایا کہ وہ ڈھائی بجے نماز پڑھ رہے تھے ٹی وی بند سا ان کی اہلیہ کا بھی روزہ تھا اس لیے ہمیں پتہ ہی نہیں چلا کہ طیارے کو کوئی حادثہ پیش آیا ہے حسب معمول ڈرائیور میرے بیٹے ظفر مسعود کو لینے کے لئے ائیرپورٹ گیا ہوا تھا ۔کافی دیر بعد ایک فون آیا

جس میں کسی رشتہ دار نے پوچھا کہ کیا ظفر مسعود آگئے ہیں تو میری بیوی نے بتایا کہ وہ آنے والا ہے ڈرائیور لینے گیا ہوا ہے دوسری طرف سے کہا گیا کہ آپ ٹی وی آن کریں ٹی وی دیکھیں جب ٹی وی لگایا تو دیکھا کہ طیارہ گرنے کی خبر چل رہی تھی اور وہاں اگر دعا دکھا رہے تھے ہم سب پریشان ہوگئے اور دعا کرنے لگے ۔کچھ دیر بعد میرے فون پر ایک نامعلوم نمبر سے کال آئی میں نے کال اٹینڈ کی تو ظفر بول رہا تھا اس نے کہا پاپا میں ٹھیک ہوں ظفر نے بتایا کہ وہ سی ایم ایچ ملیر میں زیر علاج ہے میرے چھوٹے بیٹے جو اکٹھے رہتے ہیں وہ دونوں سی ایم ایچ ملیر پہنچ گئے ۔گھر والوں کو قدرے اطمینان ہوا یہ معجزہ ہی تھا کہ ظفر طیارہ حادثے میں بچ گیا ۔

منور سعید نے کہا کہ طیارہ حادثے کی تحقیقات ہورہی ہے رپورٹ آئے گی تو پتہ چلے گا کہ اصل وجہ کیا بنی ہوا کیا اور طیارہ کیسے گرا انہوں نے کہا کہ میں نہیں سمجھتا کہ پائلٹ سے کوئی غلطی ہوئی ہو گی کیوں کہ پائلٹ نے تو جہاز کو بچانے کی پوری کوشش کی جان بوجھ کر کیوں کرائے گا ۔اصل وجہ تو رپورٹ سامنے آنے پر ہی پتہ چلے گی