دستیاب پانی کی فراہمی کیلئے واٹربورڈ موثرحکمت عملی اختیارکی جارہی ہے

وزیربلدیات وچیئرمین واٹربورڈ سید ناصرحسین شاہ نے واٹربورڈ کوضلع ملیر سمیت شہر کے دیگر علاقوں میںدستیاب پانی کی بہتر فراہمی ومنصفانہ تقسیم کیلئے فوری اور موثر اقدامات کی ہدایات کی ہے ، شہریوں کی فراہمی ونکاسی آب سے متعلق شکایات کے ازالہ کی رفتار کو مزید بڑھایا جائے گاجبکہ دستیاب پانی کی فراہمی کیلئے واٹربورڈ موثرحکمت عملی اختیارکی جارہی ہے ،

md water board asad ullah khan

یہ بات ایم ڈی واٹربورڈ اسداللہ خان نے رکن قومی اسمبلی حلقہ این اے 238سید آغا رفیع اللہ، رکن سندھ اسمبلی حلقہ پی ایس 89سلیم بلوچ اور ان کے ساتھ آئے منتخب نمائندگان و علاقہ عمائدین سے گفتگو کرتے ہوئے کہی ،اس موقع پر منعقدہ اجلاس کے دوران گفتگو کرتے ہوئے ایم ڈی واٹربورڈ نے کہا کہ واٹربورڈمنتخب نمائندگان کی جانب سے اجاگر کیئے گئے فراہمی ونکاسی آب کے مسائل کے حل کیلئے کوشاں ہے ،عید تعطیلات خصوصاً لاک ڈاو ¿ن کے دوران بھی واٹربورڈملازمین نے اپنے فرائض کی ادائیگی میں کسی مجبوری یا مسئلہ کو حائل نہیں ہونے دیا ،شہریوںکو اس دوران بھی معمول کے مطابق دستیاب پانی کی فراہمی اور منصفانہ تقسیم جاری رہی ، انہوں نے کہاکہ منتخب نمائندے شہریوں کے قریب رہتے ہیں اس لیئے وہ ان کے مسائل بھی باخوبی جانتے ہیں ، اسد اللہ خان نے بتایا کہ واٹربورڈ کے افسران اور انجینئرز کو پابند کیا گیا ہے کہ وہ منتخب نمائندوں ، شہری وضلعی انتظامیہ ومتعلقہ اداروںسے رابطہ میں رہیں اور ان کے نشاندہی کردہ مسائل فوری حل کریں، اس موقع رکن رکن قومی اسمبلی آغا رفیع اللہ اور رکن صوبائی اسمبلی سلیم بلوچ نے ایم ڈی واٹربورڈ کو اپنے حلقہ انتخاب میں پانی اور نکاسی آب کے مسائل سے آگاہ کیا اور ملیر ،مظفر آباد کالونی،مانسہرہ کالونی،داود چالی ،کچی آبادیوں،مضافات میں قائم مختلف گوٹھوںاور ملحقہ علاقوںکے عوام کو دپیش فراہمی آب کے مسائل فوری حل کرنے پر زور دیا ، ایم ڈی واٹربورڈ نے ان مسائل کے فوری حل کیلئے اجلاس میں موجود افسران کو ضروری ہدایات دیں اور اراکین اسمبلی کو ہر ممکن تعاون کا یقین دلایا ،اجلاس میں طے پایا کہ جلد منتخب نمائندگان کے ساتھ ان علاقوں کا دورہ کرکے مسئائل کا جائزہ لیا جائے گا اور ان کے حل کیلئے باقاعدہ منصوبہ بندی کی جائے گی تاکہ مسائل کا مستقل بنیادوں پر خاتمہ کیاجاسکے ،اجلاس میں چیف انجینئر سیوریج سلیم احمد ، چیف انجینئر واٹرغلام قادر عباس، چیف انجینئر بلک ظفرپلیجو ، سپرنٹنڈنگ انجینئر محمد ریاض ،عثمان خاصخیلی ،ایگزیکٹیوانجینئر عمران عبداللہ اور دیگر افسران وانجینئرز بھی موجود تھے