جناح اسپتال کی ڈائریکٹر ڈاکٹر سیمی جمالی علیل ہونے کے بعدنجی اسپتال میں زیر علاج

جناح اسپتال کی ڈائریکٹر ڈاکٹر سیمی جمالی علیل ہونے کے بعدنجی اسپتال میں زیر علاج۔ڈاکٹر سیمی جمالی کی بیماری نجی اسپتال میں زیرعلاج ہونے کے معاملے کو چھپایا گیا تھا ان سے پہلے ان کے شوہر بھی نجی اسپتال میں زیر علاج رہے

ذرائع کے مطابق ڈاکٹر سیمی جمالی کو کرونا نہیں ہے بلکہ کوئی اور بیماری ہے لیکن لوگوں کے ذہن میں یہ سوال ضرور اٹھتا ہے کہ جناح اسپتال کی ڈائریکٹر اپنا علاج جناح اسپتال سے کیوں نہیں کروا رہی اور انہیں آغا خان ہسپتال میں کیوں زیر علاج رکھا گیا اور ان کے شوہر کو ساؤتھ سٹی ہسپتال سے علاج کرایا گیا ۔ابھی تک یہ بھی واضح نہیں ہے کہ کیا ڈاکٹر سیمی جمالی کے علاج پر ہونے والے اخراجات جناح اسپتال یعنی سرکاری خزانے سے ادا کئے جائیں گے کیونکہ وہ سرکاری ملازم ہیں ۔اور یہ بھی واضح نہیں ہے کہ اگر ایسی کونسی بیماری اور کونسا علاج ہے جو جناح اسپتال میں تو دستیاب نہیں ہے اور اس کے لیے ڈاکٹر سیمی جمالی کو نجی اسپتال میں داخل ہونا پڑا ۔ماضی میں بھی یہ سوال اٹھایا جاتا رہا ہے کہ اگر حکمران سرکاری اسپتالوں میں علاج نہیں کرائیں گے تو سرکاری اسپتالوں پر عوام کا اعتماد کیسے بحال ہوگا اب خود جناح اسپتال کی ڈائریکٹر سیمی جمالی جنہیں طبیعت کو میں نہایت عزت اور احترام کی نگاہ سے دیکھا جاتا ہے اور سرکاری حلقوں میں بھی انہیں کافی احترام حاصل ہے کیونکہ مختلف ایمرجنسی کیس میں خاص طور پر دہشت گردی کے واقعات بم دھماکوں اور حادثات کے موقع پر ہمیشہ سیمی جمالی اہم فرائض اور خدمات انجام دیتی نظر آتی ہیں انتہائی متعلق اور سرگرم رہتی ہیں اب وہ خود بیمار ہیں اور زیر علاج ہیں ان کے لیے عطر سے نیک تمناؤں کا اظہار کیا جا رہا ہے کہ اللہ تعالی اپنے جلد مکمل صحت یابی عطا فرمائے اور دوبارہ وہ جن اسپتال میں اپنے فرائض سنبھال سکیں ۔انہوں نے بہت سے زخمیوں اور خطرے کی حالت میں آنے والے مریضوں کی جان بچائی ہے ان کے ساتھ بہت سے لوگوں کی دعائیں ہیں