چین نے ایک ہی دن میں بھارت میں ہوائی اڈہ تعمیر کردیا. اور بھارت کو خبر تک نہ ہونے دی اب بھارتی میڈیا رو رہا ہے

اس کو کہتے ہیں ہاتھ کی جگہ بازو کا استعمال کرنا .چین نے ایک ہی دن میں بھارت میں ہوائی اڈہ تعمیر کردیا. اور بھارت کو خبر تک نہ ہونے دی اب بھارتی میڈیا رو رہا ہے۔بھارت ماتا.کی جے ہو !!!

سستے دانشوڑوں جب تم سن رہے تھے کہ یہ پاکستان کیوں خوش ہورہا ہیں اس وقت ہم نے تمہارے تشریف شریفی کیڑے کا سراغ بھی لگالیا تھا. اس کا مطلب تھا کہ پاکستان بھارت پر حملہ کردے اور بھارت سیدھا فیصلہ اقوام متحدہ لے جائے.. نا پتر نا ہم پہلا تمہارا گلہ دبائیں گے تاکہ اواز نہ نکلے . اور پھر آہستہ آہستہ سانس بھی بند کردیں گے . نہ رہے گا بانس نہ بجے گی بانسری

اسی خوف میں مبتلا مودی نے پہلی فرصت میں مقبوضہ کشمیر کی متنازع حیثیت کو تبدیل کر دیا تاکہ پاکستان غصے میں کشمیر پر حملہ کردے اور بھارت وہی عالمی برادریوں کے پاس جاکر رونا دھونا شروع کردے (یاد رہے اس سارے کھیل میں امریکہ،اسرائیل شامل تھے) اور کسی طرح پاکستان کو بلیک لسٹ کرکے ایٹمی ہتھیاروں کو ڈس ایبل کرنے پر مجبور کر سکیں۔

پر وہ بھول گئے کہ پاکستان اللّہ کے رازوں میں سے ایک راز ہے پاکستان کے ذہین دماغوں نے اسی وقت طے کرلیا کہ کشمیر تو اب لیں گے ہی ساتھ امریکہ اور بھارت پر ایسی کاری ضرب لگائیں گے انہیں یہ سمجھتے سمجھتے سالوں لگ جائیں گے کہ انکے ساتھ ہوا کیا ہے ٹھیک ویسا ہی ہوا سب سے پہلے پاکستان نے آمریکہ بہادر کو ناک رگڑوائی اور اب بھی رگڑوا رہا ہے بہ زریعہ طالبان اور اب بھارت کا نمبر ہے۔

آرٹیکل 370 کے بعد پاک فوج کو ٹکے ٹکے کی باتیں سنانے والے فیس بکی دانشوڑ۔۔۔۔۔۔چاہتے ہیں کہ فیس بک پر پالیسیاں ان کو بتا کر بنائی جائیں۔

آفرین ہے ان شہزادوں پر جو انکی کسی بات کو دل پر لئیے بغیر اپنے مقصد پر فوکس کر رہے ہیں بھارت نے لاکھ کوشش کی کہ کسی طرح پاکستان ان پر حملہ کردے پر ایسا نہ ہوا پاکستان نے کمال مہارت سے بھارت کے تمام وہ دروازے بند کردئیے جن کے پاس وہ ہمیشہ بھاگ کر جاتا تھا جنگ بندی کی بھیک مانگنے کے لیے جی ہاں وہی یونائیٹڈ نیشن وغیرہ وغیرہ….

پاکستان نے پوری دنیا پر یہ واضح کیا کہ بھارت کشمیریوں پر ظلم و جبر کے پہاڑ توڑ رہا ہے اور یہ بھی باور کرایا کہ وہاں ہونے والے حملوں میں پاکستان کا کوئی ہاتھ نہیں بلکہ یہ وہاں کی آزادی پسند تحریکیں ہیں جو اپنے حق خود ارادیت کے لئے ہتھیار اٹھانے پر مجبور ہو چکے ہیں اس کے بعد پاکستان نے پوری دنیا میں بھارت کو زلیل و رسوا کیا۔

بھارت نے کشمیر کی متنازع حیثیت تو ختم کرنے کی کوشش کر تو دی پر وہ اس کے گلے کی ہڈی بن چکا ہے آئے روز کشمیر سے بھارتی مظالم کی وڈیو سامنے آرہی ہیں اور پوری دنیا بھارت پر تھو تھو کر رہی ہے اس سے ان تمام مغربی ممالک کی عوام میں بھارت کے لئے جو نرم گوشا تھا وہ ختم ہوچکا ہے …

اب وہ انہیں گالیوں سے نوازتے ہیں عوام بھی اور کابینہ بھی (وہی کابینہ جسکا وفد کچھ ماہ پہلے کشمیر کے دورے پر آیا تھا اور انہیں بھارتی فوج نے کشمیری عوام سے ملنے نہیں دیا وہ وہیں سے واپس ہو لئے اور اپنے ملک جا کر بھارت کو ننگا کردیا )

دوسری جانب چین اور پاکستان نے مل کر بھارت کو مشرق سے گھیرنے کا فیصلہ کیا چین لداخ سے ، پاکستان آزاد کشمیر سے، مجاہدین مقبوضہ کشمیر سے ( یاد رہے اس وقت خطے میں سب سے زیادہ فوج لداخ سے مقبوضہ کشمیر تک تعینات ہے ….

تقریباً بھارتی فوج کا 60٪ فیصد یعنی 12 لاکھ بھارتی فوج ) جب اتنی بڑی فوج کو چاروں اطراف سے گھیر لیا جائے تو انکے پاس سرینڈر یا موت کے سوا دوسرا کوئی راستہ نہیں بچتا) جب کسی بھی فوج کو اتنی بڑی چوٹ پڑتی ہے تو وہ اپنے حواس کھو بیٹھتی ہے جیسے کہ ابھی وہ چین سے بھیک مانگ رہے ہیں…..

کیونکہ وہ جانتے ہیں اکیلا چین کبھی انکا کچھ نہیں بگاڑ سکتا وہ یہ بھی جانتے ہیں کہ اس سب کے پیچھے پاکستان ھے بس انہیں سمجھ نہیں آرہی کہ کیسے اور جب تک وہ سمجھیں گے لداخ سمیت دوسرے علاقوں پر قبضہ ہو چکا ہوگا ان شاءاللہ

یہ کچھ وہ باتیں ہیں جو عوام کے شعور میں لانا بہت ضروری تھا کیونکہ ہم گزشتہ کئی دنوں سے دیکھ رہے ہیں کچھ لوگ پاکستان اور پاک فوج کے نام سے فیا بک اور ٹویٹر پر اکاؤنٹ چلا رہے ہیں اور ان پر بس پروپیگنڈہ کیا جاتا ہے تاکہ پاکستان کی عوام کو بدظن اور مایوس کیا جاۓ.

بھروسہ رکھیں اپنی اس پاک فوج پر جس نے سوویت یونین کے ٹکڑے ٹکڑے کردیے امریکہ بہادر کو گھٹنوں پر لا کھڑا کیا جسکی خفیہ ایجنسی دنیا کی سب سے بہترین ایجنسی ھے. آپکو لگتا ھے کہ اسکے لئے بھارت کوئی بڑا مسئلہ ہے بس تھوڑا صبر رکھیں آپکو آنے والا وقت بتائے گا کہ پاکستان نے کیا کیا۔۔۔۔۔

افواج پاکستان کو اپنی دعاؤں میں یاد رکھیں
اپنی فوج پر بھروسہ رکھیں
اپنی فوج کے شانہ بشانہ کھڑے رہیں دنیا کی کوئی طاقت ہمیں ہرا نہیں سکتی ۔ایمان تقویٰ اور جہاد فی سبیل اللہ کا ماٹو رکھنے والی پاک فوج اپنے رب پر ہمیشہ یقین رکھتی ہے اور ہمیشہ صبر ،تدبیر اور حاضر دماغی سے لڑتی ہے اور بے پناہ قربانیوں کے بعد جنگ کا ہیرو بھی بنتی ہے۔۔

قیوم سندھو ( لاہور )