پتر اب کیا ہم اپنے محافظوں سے پیسے لیں گے؟

کل افطار کے بعد ایک معصوم سی بچی کا فون آیا کہ سر مجھے PPE Suit اور N95 Mask لینا ھے ۔ کتنے کا دیں گے ۔ میں نے پوچھا بیٹا آپ ان چیزوں کا کیا کرو گی ۔ کہنے لگی میں JPMC میں ڈاکٹر ہوں اور کل سے میری ڈیوٹی کورونا وارڈ میں لگ گئی ہے اور مجھے ہاسپیٹل سے کچھ بھی نہیں ملا ۔ سوچا خود خرید لیتی ہوں ۔

کیا جواب دیتا ۔ کچھ سمجھ ہی نہیں آیا کہ کیا قیمت بتاوں ۔ بس کانوں میں 18 سال پرانی ایک آواز گونجی “پتر اب کیا ہم اپنے محافظوں سے پیسے لیں گے؟

2002 میں جب انڈیا سے جنگی تیاریاں عروج پر تھیں تو میں بطور کمانڈنگ آفیسر ایک فیلڈ ہاسپیٹل لیکر اوکاڑہ کینٹ سے فورٹ عباس جارہا تھا ۔ پوری آرمی جنگی تیاریوں میں اپنے اپنے محاذ پر رواں دواں تھی اور ہر طرف سڑکوں پر فوجی گاڑیاں نظر آتی تھیں ۔ ہم نے ہارون آباد سے پہلے ایک گاوں کے ساتھ پڑاو کیا تاکہ جوان دوپہر کا کھانا کھا سکیں ۔ ساتھ ہی مالٹے کا باغ تھا اور گڑ بنانے کا بیلنا چل رہا تھا ۔ میں نے سوچا کیوں نہ کچھ مالٹے اور گنے کا رس خریدا جائے ۔ بیٹ مین کو مالک کے پاس بھیجا مگر وہ خالی ہاتھ واپس آگیا اور کہنے لگا وہ بیلنے والے بابا جی کہتے ہیں جو چاہیے لے جاو مگر پیسے نہیں لونگا۔

میں جیپ سے اتر کر خود بیلنے پر گیا ۔ میلے کچیلے کپڑوں میں ملبوس بابا جی خوب محبت سے ملے ۔ میں نے مالٹے اور گنے کا رس خریدنے کی خواہش ظاہر کی تو کہنے لگے جی جی جو چاہیے لے لو ۔ میں نے کہا بابا جی مگر آپ پیسے تو لیں ناں ۔ بابا جی نے آگے بڑھ کر بہت محبت سے میرا ہاتھ پکڑ لیا اور کہنے لگے “پتر کیا اب ہم اپنے محافظوں سے مالٹوں اور رس کے پیسے لیں گے؟ میں لاجواب کھڑا رہ گیا ۔ کوئی جواب نہ بن پڑا تو دو قدم پیچھے ہٹ کر بابا جی کو اس طرح فوجی سلیوٹ کیا جیسے سامنے GOC کھڑے ہوں ۔

کاش یہ ڈاکٹر بیٹی بھی میرے سامنے ہوتی تو ایک دفعہ میں بھی وہی میلے کچیلے کپڑوں والا بابا بن کر اسکا ہاتھ پکڑ کر کہہ سکتا کہ “پتر کیا اب ہم اپنے محافظوں سے PPE Suits اور N 95 Mask کے پیسے لیں گے” ۔ کیا ہم سب کا دل اس بابا جی جیسا نہیں ہو سکتا کہ کوئی ڈاکٹر بیٹی اس طرح فون کرکر کے اپنے لئے حفاظتی چیزوں کی قیمتیں نہ پوچھتی پھرے ۔

اب میں نے کچھ چیزیں آفس سے لاکر گھر میں رکھ لی ہیں ۔ اپنی بیگم سے کہہ دیا ہے کہ اس بچی کو صبح دونوں چیزیں اپنے ڈرائیور کے ہاتھ بھجوا دے اس دعا کے ساتھ کہ اللہ اسے اپنے حفظ و اماں میں رکھے ۔

#بشیرآرائیں#
#BrigBashirFoundation
#DoctorsShouldnotpay