اشیاء کی بین الاقوامی نقل و حمل کیلئے فنانشل گارنٹی لازمی قرار دینے کا فیصلہ

وفاقی حکومت نے آئندہ مالی سال 2020-21 کے وفاقی بجٹ میں شپنگ کمپنیوں اورایجنٹس کیلئے ملک بھر سے سمندری بندرگاہوں کے ذریعے اشیا کی بین الاقوامی نقل و حمل کیلئے فنانشل گارنٹی کو لازمی قرار دینے کا فیصلہ کیا ہے۔ جس کیلئے کسٹمز رُولز 2001 میں ترامیم کی جارہی ہیں۔ فیڈرل بورڈ آف ریونیو(ایف بی آر) نے متعلقہ اسٹیک ہولڈرز کی جانب سے موصول ہونیوالی آراء و تجاویز کی روشنی میں کسٹمز رولز 2001 میں ترامیم کے مسودہ کو حتمی شکل دیدی ہے۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ یہ ترمیمی رولز بجٹ سے قبل ہی نافذ کیا جانا تھے جس کیلئے رولز کا مسودہ تیار کرکے اسٹیک ہولڈرز کو بھجوایا گیا تھا اور اسٹیک ہولڈرز کی آراء موصول ہوچکی ہیں اور اس میں مزید کچھ ترامیم بھی متعارف کروائی جارہی ہیں جس کے بعد اسے فنانس بل کے ذریعئے بجٹ میں شامل کیا جائے گا۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ مجوزہ ترمیمی رولزکے تحت فیڈرل بورڈ آف ریونیوکی جانب سے کسٹمز رولز میں چھ مزید نئی شقیں شامل کی جارہی ہیں جس کے تحت شپنگ کمپنیوں اورشپنگ ایجنٹس کو بین الاقوامی نقل و حمل کی سہولیات حاصل کرنے کیلئے بندرگاہوں پر لائے جانے والے سامان کی بروقت ترسیل کو یقینی بنانے کیلئے فنانشل گارنٹی فراہم کرنا ہوگی اور اسی طرح ان ترمیمی کسٹمز رولز پر عملدرآمد کو یقینی بنانے کیلئے بونڈ بھی جمع کروانا ہونگے

Courtesy Express Urdu