‏اگر محمّدٌ رسول الله ﷺ اک دن تم سے ملنے آجائیں

‏اگر محمّدٌ رسول الله ﷺ
اک دن تم سے ملنے آجائیں

asghar ali spain

بالکل اچانک تشریف لائیں

میں حیران ہوں کہ تم کیا کرو گے

بولو ؟

ہاں میں جانتا ہوں
تم اپنا بہترین کمرہ
اپنے محترم مہمان کو پیش کرو گے،
سب سے عمدہ،
سب سے اعلی طعام کا اہتمام کرو گے،
اپنی ہر بات سے انھیں احساس دلاؤ گے،
‏کہ ان کی آمد سے تم بہت خوش،
بہت دلشاد ہو،

ان کی آمد تمہارے لیے اک اعزاز ہے،
اک ناقابل بیان مسرّت،

اور ہاں میں جانتا ہوں،
ہر مسلمان کا یہ حسین خواب ہے،

لیکن

جب انھیں آتا دیکھو گے،
کیا دوڑ کر ان سے دروازے پر مل پاؤ گے ؟
ان کے استقبال میں اپنے بازو وا کر سکو گے؟
‏یا پھر ان کے آمد سے پہلے

اپنا لباس تبدیل کرنے دوڑ جانا پڑے گا،

ان کی نظروں سے چھپا کر،
تمام بے ہودہ رسائل ہٹا کر،

قرآن پاک سجانا پڑے گا
کیا تم اپنے ٹی وی پر وہی لباس،
وہی بے ہودہ مناظر دکھا سکو گے ؟
یا
ان کی نظر پڑنے سے پہلے ہی،
دوڑ کر اپنا ٹی وی بھی بند کردو گے
‏کیا اس خواہش پر کہ ان کی سماعت سے،

تمہارا ریڈیو،
تمہاری سی ڈیز،
ڈی وی ڈیز دور رہیں

ان سب کو بھی کہیں چھپا دو گے ؟

کیا نغمہ و موسیقی کے آلات چھپا کر،
ان پر احادیث کی کتابیں ڈھانک دو گے ؟

کیا تم انہیں اپنے گھر کے ہر گوشے
ہر جگہ،

ہر حصہ میں بلا جھجک لے جاسکو گے؟
‏یا پھر انھیں اپنا گھر دکھانے سے پہلے ہی
یہ سب کچھ چھپانے دوڑ جاؤ گے،
اور میں حیران ہوں

اگر
محمّد رسول اللهﷺ ایک یا دو دن تمہارے ساتھ گزارنا چاہیں،

تمہاری ذات
تمھارے خاندان کو
یہ اکرام دینا چاہیں،

تو پھر

کیا تم اپنے معمول کے مطابق جو کام ہر روز کرتے ہو کر پاؤ گے؟
‏وہی گھٹیا الفاظ جو عام
روٹین میں کہتے ہو،
کہہ پاؤ گے؟

کیا تمہاری زندگی کے روز و شب
کے معمولات برقرار رہ سکیں گے؟

کیا تمھاری روز مرہ کی گفتگو،
ویسے ہی جاری رہ سکے گی؟

یا تمھارے لیے ان کے ساتھ کھانا کھاتے ہوۓ،
کھانے کی دعائیں پڑھنی بھی
مشکل ہو جائیں گی ؟
‏تمہیں نمازیں ٹال کر سو جانا یاد رہے گا؟
یا
تمہیں خوشی کے اظہار کے ساتھ
رب کے دربار میں
بار بار جھکنا پڑے گا

جو گیت اور نغمے اکثر گنگناتے ہو
وہی گنگنا پاؤ گے ؟

وہی کتابیں وہ رسالے جو پڑھتے ہو
پڑھ پاؤ گے؟

انہیں بتا سکو گے کہ تمہاری سوچ،
تمھارے خیالات اور تمہاری نگاہیں،
‏کہاں کہاں بھٹکتی،
کس کس کو کہاں اور
کیسے ٹٹولتی رہتی ہیں،

انھیں بتا پاؤ گے
کہ یہ سب کچھ تمہاری روح
تمھارے وجود میں سمایا ہوا ہے،

کیا ہر اس جگہ جہاں تم جاتے ہو

محمّد رسول اللهﷺ کو
اپنے ہمراہ لے جا سکو گے؟

اپنے ہر ساتھی
ہر ملنے والے سے انھیں ملوا پاؤ گے؟
‏یا چاہو گے کہ ان کے قیام تک
یہ
سب تم سے دور ہی رہیں ؟

اور اگر وہ

اگر وہ ساری عمر تمھارے ساتھ رہنا چاہیں ؟

تو کیا تم تمام عمر کے لیے
انھیں اپنا مہمان بنا پاؤ گے ؟

اگر میں جاننا چاہوں کہ تم کیا کرو گے

اگر محمّد رسول الله ﷺ کچھ دن
کچھ وقت تمارے ساتھ گزارنا چاہیں
‏اپنی امت کے احوال سے آگاہی کے لئیے
اپنی امّت کی خیر خواہی کے لیے
تمھارے گھر مہمان رہیں
زرا سوچ میں کیسے انہیں رکھوں گا؟
میں یہاں کیسے رھوں گا اور وہاں کیسے؟

بلکہ ٹھہرئیے

اپنی سوچ کو آگے لے جائیے

محمّد رسول الله ﷺ کا تو آپکے گھر
یا آپ کے پاس آ کر رہنا
‏ممکن نہیں
لیکن

آپکی چاھت اور خواہش تو ہے نا
کہ
آپ جنت میں جائیں
محمّد رسول الله ﷺ کی شفاعت
حاصل کریں اور وہاں
ان کے ساتھ رہیں تو پھر ضروری
ہے کہ آپ اپنی زندگی ویسی ہی گزاریں جیسی محمّد رسول الله ﷺ کو پسند ہو،
کیونکہ ہمیشہ سوچ رکھو
جب آقا سے ملاقات ہو وہ مسکرا کر دیکھیں۔۔

اصغر علی ( اسپین )