ریحام خان سابقہ شوہروں سے متعلق نجی سوالات کے جواب دینے کی وجہ سے تنقید کی زد میں

وزیراعظم کی سابقہ اہلیہ ریحام خان نے سوشل میڈیا پر تنقید کے بعد میزبان وقار ذکا پر شو ایڈیٹ کرنے کا الزام لگا دیا
میزبان وقار ذکاء نے کورونا وائرس کے بعد عوام کا ڈپریشن کم کرنے اور ان کی انٹرٹینمنٹ کے

لیے ’’ہیڈ فون شو‘‘کے نام سے ایک منفرد شو متعارف کروایاجو دیکھتے ہی دیکھتے عوام میں مقبول ہو گیا۔وقارذکا نے اب تک اس شو میں مختلف شخصیات کے انٹرویوز کیے۔انہوں نے دو روز قبل وزیراعظم عمران خان کی سابق اہلیہ ریحام خان بھی انٹریوکیا جس دوران ان سے انتہائی بولڈ سوالات پوچھے گئے ،جس وجہ سے وقار ذکا اور ریحام خان کا یہ انٹریو سوشل میڈیاپر تنقید کی زد میں آ گیا

اور خبروں کی بھی زینت بن گیا۔
شو کے دوران نہ صرف میزبان نے انتہائی بولڈ اور نجی سوالات پوچھے بلکہ ریحام خان بھی ان سوالات کے جوابات دینے میں پیچھے نہ رہیں۔وقارذکا نے ریحام خان سے زیادہ تر ان کی کتاب میں کیے گئے دعووں سے متعلق سوالات کیے جو انھوں نے عمران خان سے علیحدگی کے بعد لکھی تھی۔

انہوں نے ایک موقع پر عمران خان کے ساتھ گزارے گئے وقت اور ان کی نجی زندگی کے بارے میں لکھنے کی طرف اشارہ کرتے ہوئے ریحام خان سے کہا کہ ایک دوسرے کے اوپر پردہ رکھنا چاہیے ،کیا آپ معافی مانگنا چاہیں گی؟۔

جس پر ریحام خان نے کہا کہ مغرب کی نماز کا وقت ہو گیا ہے۔

وقار ذکا نے ریحام خان سے ان کے سابقہ شہروں کی جنسی کارکردگی سے متعلق بھی سوال کیا جس کا جواب ریحام خان نے ہنستے ہوئے دیا۔شوکے آخر میں وقارذکا نے عمران خان کی تعریف کی اور کہا اس ملک کو وزیراعظم عمران خان سے بہتر لیڈر مل ہی نہیں سکتا۔تاہم نجی زندگی سے متعلق مخصوص سوالات کی وجہ سے ریحام خان ٹوئٹر پر ایک بار دوبارہ ٹرینڈ کرنے لگی ہیں۔
سوشل میڈیا پر صارفین کی جانب سے ریحام خان پر شدید تنقید کی گئی۔جس کے بعد ریحام خان نے ٹوئٹر پیغام میں وقار زکا کو ’بزدل‘ کہہ کر دعویٰ کیا کہ ان کی ساخت کو خراب کرنے کے لئے شوکو ایڈٹ کیا گیا۔ریحام خان کا مزید کہنا تھا کہ کیا میں کسی کو اپنے ساتھ اس طرح سے بات کرنے دوں گی۔

ریحام خان کے دعوے پر وقار ذکا بھی پیچھے نہ رہے اورانہیں پھر سے اپنے شو پر لائیو آنے کی دعوت دے ڈالی اور کہا کہ لائیو سوالات میں دودھ کا دودھ اور پانی کا پانی ہو جائے گا

ریحام کے ترجمان بلال عظمت کا کہنا ہے کہ ریحام خان کے پورے انٹرویو میں تبدیلیاں کی گئیں۔بعض میڈیا ذرائع کی جانب سے بھی کہا جا رہا ہے کہ ویڈیو کو دیکھ کر لگتا ہے کہ اسے باقاعدہ طور پر ایڈیٹ کیا گیا
from-urdupoint-pages