پاکستان وقت کے ساتھ معیشت کے لحاظ سے پیچھے جا رہا ہے ۔غضنفر علی خان کی خصوصی بات چیت

یہ انتہائی افسوس کا مقام ہے کہ پاکستان وقت کے ساتھ معیشت کے لحاظ سے پیچھے جا رہا ہے کوئی بھی ملک اور قوم کے ساتھ وفادار اور دیانت دار نظر نہیں آتا اور اسی وجہ سے ہمارا ملک آگے بڑھنے کی بجائے پیچھے جا رہا ہے ۔
ان خیالات کا اظہار ایف پی سی سی آئی کی قائمہ کمیٹی برائے آٹوموٹو انجینئرنگ کے سابق کنوینئر غضنفر علی خان نے ایک خصوصی گفتگو میں کیا ۔


غضنفر علی خان نے کہا کہ پاکستان میں کوئی ایسا سرکاری ادارہ نہیں جس میں قابلیت و صلاحیت موجود ہوں کہ وہ پاکستان کو معیشت کے میدان میں اسلامی ریاست کے طور پر پہلے نمبر پر لائے اور پھر پاکستان دنیا کے پہلے نمبر پر چلا جائے ایف پی سی سی آئی کی قائمہ کمیٹی براۓ آٹوموٹو انجینئرنگ کے سابق کنوینئر غضنفر علی خان کا کہنا ہے کہ یہی وہ وجہ ہے کہ ہم اپنے اہداف کو حاصل کرنے میں صرف ناکام نہیں بلکہ ہماری کوئی طویل المدتی منصوبہ بندی بھی نظر نہیں آتی متعلقہ حکام وقت ضائع کر رہے ہیں اور مجھے یہ کہتے ہوئے افسوس ہے کہ انتظامیہ بہت ہی غیر موثر اور ناکارہ ہے ۔پاکستان وقت کے لحاظ سے معیشت کے میدان میں پیچھے جا رہا ہے مناسب منصوبہ بندی نظر نہیں آتی بے ایمانی کا دور دورہ ہے اور بدعنوانی کے باعث ہم بحثیت قوم کھڑے ہونے سے قاصر ہیں لیکن انہوں نے کہا کہ اس صورتحال کے باوجود مجھے اعتماد اور یقین ہے یہ سارے معاملات جلد حل کئے جاسکتے ہیں اگر ہم ایک طاقتور اسلامی قوم کی حیثیت سے دوبارہ ترقی کی راہ پر گامزن ہو اگر ہم اپنی نیت تھی کریں اور اپنا احتساب خود کرنے کی عادت ڈالیں تو چیزیں بہت جلد ٹھیک ہو سکتی ہیں انہوں نے کہا کہ ہم ایک اسلامی ملک میں رہتے ہیں اور اللہ کا خوف اگر دل میں لائیں تو سارے کام خود بخود درست انداز میں آگے بڑھ سکتے ہیں کیونکہ ہمارے پاس کسی بھی قسم کے ٹیلنٹ کی کمی نہیں ذہانت قابلیت صلاحیت ہم کسی سے پیچھے نہیں دنیا میں ہمارے لوگوں نے اپنی صلاحیتوں کا لوہا منوایا ہے ہمارے لوگ قابل ہیں باصلاحیت ہیں ذہین ہیں ضرورت اس امر کی ہے کہ ہم اپنے اندر ایمانداری اور دیانتداری کو فروغ دیں اور اپنے ملک کی ترقی اور خوشحالی کے بارے میں سوچیں اور اپنا کام ایمانداری سے انجام دیں۔