سی این جی سیکٹر بدترین کاروباری نقصان سے دوچار ہے رضاعباس کی پریس کانفرنس

سندھ پیٹرولیم اینڈ ڈیلرز ایسوسی ایشن نے حکومت سے صوبے میں پٹرول اور سی این جی اسٹیشنز کو بھی 24 گھنٹے کھولنے کی اجازت دینے کا مطالبہ کردیا ہے ایسوسی ایشن کے

ترجمان رضا عباس نے کراچی پریس کلب میں ایسوسی ایشن کے جنرل سیکرٹری اور دیگر عہدیداروں کے ہمراہ پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ کرو نہ کی وجہ سے سی این جی سیکٹر بدترین کاروباری نقصان سے دوچار ہوا ہے سندھ کے سی این جی سیکٹر پر بھی سیلز ٹیکس کی شرح 17 فیصد سے کم کرکے 5 فیصد کی جائے سیلز ٹیکس اور گیس تعریف میں کمی سے سندھ میں فی کلو گرام سی این جی کی قیمت پٹرول سے 50 فیصد کم ہوسکتی ہے سی این جی کی قیمت اصولا پیٹرول سے 30 سے 40 فیصد کم ہونی چاہیے


صرف گیس ٹیرف میں مجوزہ کمی سے فی کلو سی این جی 90 روپے سے سو روپے پر آجائے گی رضا عباس کا کہنا تھا کہ کرونا اور محدود کاروباری اوقات کی وجہ سے سی این جی سیکٹر بحران سے دوچار ہے سندھ کے 637 اسٹیشن صوبے کی مجموعی پیداوار کا صرف دو اعشاریہ آٹھ فیصد گیس استعمال کرتے ہیں اور سندھ میں 25 سو ایم ایم سی ایف ڈی گیس کی یومیہ پیداوار ہے