وفاقی کابینہ کی منظوری کے بعد میئراسلام آباد شیخ انصرعزیز کو معطل کر دیا گیا

وفاقی کابینہ کی منظوری کے بعد میئراسلام آباد شیخ انصرعزیز کو معطل کر دیا گیا ہے۔

کابینہ کی منظوری کے وزارت داخلہ کی جانب سے جوائنٹ سیکریٹری عرفان انجم نےنوٹیفکیشن جاری کیا۔

شیخ انصرعزیز کو معطل کرنے کی سمری کی منظوری کابینہ نے سرکولیشن کے ذریعے دی ہے۔

نوٹیفکیشن کے مطابق میئراسلام آباد شیخ انصرعزیز کو 90 روز کے لیے معطل کیا گیا ہے اور اس کا مقصد صاف شفاف انکوائری کرنا ہے۔

خیال رہے کہ بد عنوانی، اقربا پروری، بدانتظامی، سرکاری خزانے کو نقصان سمیت متعدد الزامات ثابت ہونے پر لوکل گورنمنٹ کمیشن نے میئر اسلام آباد شیخ انصرعزیز کو معطل کرنے کی وزارت داخلہ کو سفارش کی تھی۔

باوثوق ذرائع کے مطابق جمعرات کے روز لوکل گورنمنٹ کمیشن کا اجلاس چیئرمین کمیشن علی نواز اعوان کی سربراہی میں ہوا، جس میں میئر اسلام آباد شیخ انصرعزیز کے خلاف انٹرسٹی ٹرانسپورٹ اڈا میں چار کروڑ روپے کی کرپشن کا ریفرنس پیش کیا گیا۔

میئر کیخلاف مذکورہ ریفرنس چیف میٹروپولیٹین آفیسر(سی ایم او) سیدہ شفق ہاشمی نے پیش کیا، جس پر چئیرمین کمیشن علی نواز اعوان نے کمیشن کے ارکان کی ووٹنگ کے بعد میئر کی معطلی کی سفارش وزارت داخلہ کو بھجوا دی۔

کمیشن نے میئر اسلام آباد کے ماتحت شعبے ڈائریکٹوریٹ آف میونسپل ایڈمنسٹریشن (ڈی ایم اے) میں اشتہاراتی بورڈز کی ٹیکس وصولی میں مبینہ طور پر اربوں روپے کی کرپشن پر مبنی ذیلی کمیٹی کی رپورٹ پر تحقیقات کے لئے تمام ریکارڈ ایف آئی اے کے حوالے کرتے ہوئے تحقیقات کی سفارش کی تھی۔

میڈیا میں یہ خبریں بھی گردش کرر ہی ہیں کہ تحقیقات مکمل ہونے تک میئر اسلام آباد، ڈپٹی میئرز اور متعلقہ افسران کے نام ایگزٹ کنٹرول لسٹ میں ڈالنے پر بھی غور شروع کر دیا گیا ہے۔