ٹرین چلانے کا فیصلہ منگل کو ہو گا:وزیر ریلوے شیخ رشید

وزیر ریلوے شیخ رشید احمد کا کہنا تھا کہ بدھ کا دن اس لئے فائنل کیا کہ کسی سے لڑائی نہ ہو،میں کوئی تھکا ہوا منسٹر نہیں ہوں میرے رنگ پسٹم خراب نہیں ہیں،اگر بدھ والے دن اجازت نہ ملی تو حکام کو کہوں گا پیسے قوم کو واپس کر دیں گے، میں خود بھی ٹرین چلانے کا فیصلہ کر سکتا ہوں لیکن مجھے عمران خان کا انتظار ہے، ٹرین چلانے کا فیصلہ منگل کو ہوگا۔ میں عمران خان کا منتظر ہوں یہ چاروں صوبوں کی زنجیر ہے، 2 لاکھ لوگوں نے گھروں کو جانا ہے، آپ نے بسوں جہازوں کو اجازت دے دی ہے ہمارا کیا قصور ہے،ٹرین ہی ملک کا ملاتی ہے ہم کسی سے الجھنا نہیں چاہتے، پرسوں سے زیادہ میں انتظار نہیں کرسکتا،کسی نے میری طاقت کا اندازہ کرنا ہے تو اللہ کی طاقت کے بعد میں پرسوں ٹرینیں چلا سکتا ہوں،مجھے صرف عمران خان سے ملاقات کا انتظار ہے،میں کسی صوبے کے ماتحت نہیں ہوں،ٹڈیوں کو بھی پر لگ گئے ہیں،میں کہتا ہوں سارا عملہ تیاری رکھے یا ہم پرسوں ٹرینیں چلائیں گے یا عید تک نہیں چلائیں گے۔
ان کا مزید کہنا تھا کہ مراد علی شاہ کو پتہ ہے کراچی کا ٹریک اگر کھلے گا تو ریل چلے گی، میں مراد علی شاہ سے بات نہیں کرنا چاہتا،ٹرین عمران خان کے انڈر ہے مراد علی شاہ کے نہیں لیکن میں مراد علی شاہ سے فون پر بات کر سکتا ہوں ان سے میرے تعلقات اچھے ہیں۔
شیخ رشید نے کہا کہ عمران خان کی حکومت 5 سال پوری کرے گی،نیب 31جولائی تک ایمنڈمنٹ نہ ہوئی میں ایمنڈمنٹ کو ووٹ نہیں دوں گا،31جولائی تک نیب کا دونوں طرف جھاڑو پھڑے گا، بڑی عید سے پہلے جھاڑو پھر جانا ہے۔

Courtesy GNN Urdu