اسٹیٹ بینک کے اقدامات حوصلہ افزا ہیں شرح سود 7 فیصد کی جائے ۔زبیر طفیل

پاکستان کے ممتاز صنعت کار اور بزنس کمیٹی کے ہردلعزیز رہنما اور طفیل کیمیکلز کے سی ای او زبیر طفیل نے اسٹیٹ بینک سے مطالبہ کیا ہے کہ شرح سود کو مزید کم کرکے 7فیصد رکھا جائے اپنے بیان میں انہوں نے گورنر اسٹیٹ بینک کے حالیہ اقدامات کو سراہتے ہوئے کہا کہ کرونا وائرس سے پیدا شدہ صورتحال میں گورنر اسٹیٹ بینک کے اقدامات نے انڈسٹری کو سہارا دینے کے لیے کافی اچھی کوششیں اور مدد کی ہے لیکن کم آمدن والے طبقے کے لئے جو ہر مہینے بیس تیس ہزار روپے کر لے کر جاتے تھے اور دو مہینے سے وہ گھر پر بیٹھے ہیں اور ان کی آمدن بند ہے ان کے لئے بھی کوئی نئی اسکیم متعارف کرائی جائے انہوں نے کہا کہ 15 بھائی کو اسٹیٹ بینک نے شرح سود میں کمی کی ہے اور سو بیسز پوائنٹس کم کیے ہیں اور شرح سود آٹھ فیصد مقرر کی ہے تاجربرادری توقع کر رہی تھی کہ کم ازکم 220 پوائنٹ کم کیے جائیں گے اب ہم گورنرسٹیٹ بینک سے اپیل کرتے ہیں کہ اگلے مہینے ایک مرتبہ پھر نظرثانی کریں اور شرح سود 7 فیصد مقرر کریں انہوں نے کہا کہ دو مہینے سے ملک میں انڈسٹری بری طرح متاثر ہوئی ہے خاص طور پر آٹو موبائل اور دیگر انڈسٹری پر منفی اثرات پڑے ہیں انڈسٹری کا پر یارو گیا تھا اور دو مہینے سے لوگوں کی آمدن نہیں ہے ان حالات میں اسٹیٹ بینک میں اچھے اقدامات اٹھائے ہیں جو لوگ تنخواہ نہیں دے سکتے تھے ان کو تنہا دینے کے لیے قرضوں کی ادائیگی آسان بنانے کی اسکیم متعارف کرائی گئی جس کو ہم سراہتے ہیں لیکن مزید ایسی اسکیم کی ضرورت ہے جو کم آمدن والے طبقے کی مدد کرسکے انہوں نے کہا کہ ہم تو آپ رہتے ہیں کہ آنے والے دنوں میں معاشی سرگرمیاں بہتر ہوگی اور انڈسٹری بہتر طریقے سے بحال ہوسکے گی