وزیر اعلی سندھ مراد علی شاہ اور وزیر کوآپریٹیو جام اکرام اللہ دھاریجو سے درد مندانہ اپیل

فشر مینز کوآپریٹیو سوسائٹی ایمپلائی یونین فش ہاربر کے جنرل سکریٹری سعید بلوچ نے وزیر اعلی سندھ مراد علی شاہ اور وزیر کوآپریٹیو جام اکرام اللہ دھاریجو سے درد مندانہ اپیل کی ہے کہ سوسائٹی کے ملازمین کو دو ماہ کی تنخواہ فوری دلائی جائے۔انہوں نے کہا کہ سندھ حکومت نے تمام محکموں کو کہا ہے کہ عید کی تنخواہ عید سے ایک ہفتے قبل ادا کر دی جائے

لیکن سوسائٹی میں پچھلے مہینے اپریل کی تنخواہ بھی نہیں ملی جس کی وجہ سے اکثر غریب ملازمین کے گھروں پر فاقوں کی نوبت آ گئی ہے۔انہوں نے کہا لاک ڈاون میں پورا شہر پریشان ہے اس میں سوسائٹی کے ملازمین کو دو ماہ کی تنخواہ نہ دینا حکومت کی رٹ کو چیلنج کرنے کے مترادف ہے۔انہوں نے کہا کہ ایک تو رمضان کا مقدس مہینہ ہے پھر عید سر پر ہے ان حالات میں تنخواہ نہ ملنے سے ملازمین شدید ذہنی دباو کا شکار ہے۔انہوں نے کہا کہ مارچ اور اپریل ماہی گیری کا پیک سیزن ہوتا ہے جبکہ جون جولائی میں مچھلیوں کے شکار پر پابندی ہوتی ہے۔انہوں نے کہا کہ جب پیک سیزن میں تنخواہیں نہیں مل رہیں تو پابندی کے مہینوں میں تنخواہیں کیسے ملے گئیں،اس وقت ان ملازمین کا گھر کیسے چلیں گے اس سلسلے میں وزیر کوآپریٹیو اور وزیر اعلی کو فوری ایکشن لینا چاہیئے اور غیر قانونی چیئرمین کو برطرف کر کے الیکشن تک انتظامات منتخب ڈائریکٹرز کے حوالے کیا جائے تاکہ وہ ماہی گیروں اور ملازمین کے مسائل حل کریں۔انہوں نے کہا کہ ایک طرف ملازمین کو تنخواہ دینے کے لیئے بینک میں پیسے نہیں ہیں دوسری طرف ایک شخص ابراہیم عطا کو 85 ہزار روپے ماہانہ کی تنخواہ پر اسٹور انچارج کے طور پر اپائینٹ کیا گیا ہے جو بورڈ کی منظوری کے بغیر غیر قانونی ہے جبکہ ایسی کوئی پوسٹ خالی ہی نہیں ہے۔انہوں نے کہا کہ سوسائٹی کو بائی لاز اور قانون کے مطابق چلایا جائے جس کے لیئے ہم وزیر کوآپریٹیو سے ایک دفعہ پھر درخواست کرتے ہیں کہ وہ قانونی کاروائی کرتے ہوئے غیر قانونی چیئرمین کو برطرف کریں اور ملازمین کو دوماہ کی تنخواہیں دلائیں۔