بھارت، استعمال شدہ پی پی ای کٹ میں لکڑیاں اٹھائی جانے لگیں، ویڈیو وائرل

نئی دہلی: بھارت میں استعمال شدہ پی پی ای کٹ میں لکڑٰیاں لے کر جانے کی ویڈیو سوشل میڈیا پر وائرل ہوگئی۔

غیرملکی خبررساں ادارے کی رپورٹ کے مطابق بھارتی ریاست آگرہ میں کینٹ ریلوے اسٹیشن کے قریب دو بچے استعمال کشدہ پی پی ای کٹ میں لکڑیاں گھر لے کر جانے لگے جس کی ویڈیو وائرل ہوگئی۔

بچوں نے بتایا کہ لیبارٹری کے قریب ایک تدفین والی جگہ کے قریب کچرے کے ڈھیر سے استعمال شدہ پی پی ای کٹ ملی ہے۔

بچوں نے مقامی نامہ نگاروں کو بتایا کہ ہم نے لکڑی لے جانے کے لیے سفید سوٹ کا استعمال کیا، بعدازاں جب ہم گھر پہنچے تو ہمارے والدین نے ہمیں فوری طور پر اس سوٹ سے جان چھڑانے کا کہا اور ہم نے اسے قریبی نالہ میں پھینک دیا
رپورٹ کے مطابق دونوں بچوں کا تعلق خانہ بدوش قبیلے سے ہے اور وہ کام کی تلاش میں راجستھان کے بھرت پور سے آگرہ آئے تھے لیکن لاک ڈاؤن کی وجہ سے پھنسے ہوئے ہیں۔

بچوں میں سے ایک کے والد اوم پرکاش کا کہنا تھا کہ بچوں کو اس بات کا علم نہیں تھا کہ پی پی ای کٹ کے نقصان دہ ثابت ہوسکتی ہے اور نہ ہی انہیں معلوم تھا کہ پی پی ای کٹ کیا ہوتی ہے۔

دوسری جانب ڈاکٹر پربھت اگروال کا کہنا ہے کہ صرف وہی پی پی ای کٹ نقصان دہ یا مضر ثابت ہوسکتی ہے جسے طبی عملے نے استعمال کیا ہو۔

بھارتی میڈیا رپورٹس کے مطابق دونوں بچوں اور ان کے اہلخانہ کا کرونا ٹیسٹ لیا جائے گا