وزیراعظم کے مشیر تجارت شوگر انکوائری کمیشن میں پیش، ڈیڑھ گھنٹے تک سوالات

وزیراعظم کے مشیرتجارت عبد الرزاق داؤد شوگرانکوائری کمیشن میں پیش ہوئے اور ڈیڑھ گھنٹے تک سوالات کے جواب دیئے، ذرائع کا کہنا ہے کہ مشیرتجارت سے کمیشن ممبران نے سخت سوالات کئے۔

حکام کا کہنا ہے شوگر ایڈوائزری بورڈ نے مشیر تجارت کی سربراہی میں چینی برآمد کرنے کی سفارش کی تھی، اقتصادی رابطہ کمیٹی نے اکتوبر اور دسمبر 2018 میں چینی برآمدکرنےکی اجازت دی تھی۔ جبکہ ای سی سی نے اسی عرصے میں گیارہ لاکھ ٹن چینی برآمد کرنے کی اجازت دی تھی
وزیراعلی پنجاب عثمان بزدار نے کمیشن کے سامنے پیش ہوکر بیان ریکارڈ کرایا تھا جبکہ وزیراعلی سندھ مراد علی شاہ کو بھی کمیشن میں طلب کیا گیا تھا تاہم انہوں نے انکار کر دیا تھا۔

اس سے قبل اسد عمر نے ایف آئی اے ہیڈکوارٹر پہنچ کر چینی سبسڈی کے معاملے پر شوگر انکوائری کمیشن کے سامنے بیان ریکارڈ کروایا تھا۔

وزیراعلیٰ پنجاب عثمان بزدار اور وفاقی وزیر اسد عمر کے شوگر انکوائری کمیشن کے سامنے بیان ریکارڈ کروانے پر ردعمل دیتے ہوئے وفاقی وزیر اطلاعات شبلی فراز نے کہا کہ نئےپاکستان میں افرادقانون کےتابع ہیں

Courtesy Ary Urdu