تحریک انصاف کے رکن سندھ اسمبلی راجہ اظہر خان کا وزیر اعلیٰ سندھ کو خط

صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی کے ساتھ علماء کرام کی مشاورت سے جو ضابطہ طے ہوا تھا سندھ حکومت نے خود ہی اس ضابطے کی دھجیاں اڑادی، راجہ اظہر خان

تمام مکاتب فکر کے علماء کرام نے صدر مملکت کی تجاویز پر اعتماد کرتے ہوئے تعاون کی یقین دہانی کروائی تھی، راجہ اظہر خان

جب وفاقی حکومت یا صدر مملکت کی جانب سے تمام مکاتب فکر کے علمائے کرام سے مل کر ایک متفقہ طور فیصلہ کرلیا گیا تھا تو سندھ حکومت کو کیا ضرورت تھی اس معاملے میں خود سے ترمیم کرنے کی، راجہ اظہر خان

سندھ حکومت نے اس معاہدے کی اولاً خود ہی دھجیاں اڑائیں اور انکی مس مینیجمنٹ اور نااہلی کی وجہ سے عوام و انتظامیہ کو آپس میں دست و گریباں ہونا پڑا، راجہ اظہر خان

سندھ حکومت کی جانب سے جاری کردہ حالیہ نوٹیفیکیشن میں ہنوز ابہام موجود ہے، راجہ اظہر خان

نوٹیفکیشن کے مطابق آیا معتکفین اعتکاف پر بیٹھ سکتے ہیں یا نہیں اس میں ابھی بھی ابہام موجود ھے انیس روزے ہونے کو ھیں اور آخری عشرے کی جانب جارھے ھیں، راجہ اظہر خان

اس سے قبل جو دوعشروں میں علماء کرام کو گرفتار کیا گیا اور نماز پڑھنے کی پاداش میں جن لوگوں پر پرچے کٹے ان کا کیا ہوگا؟؟ راجہ اظہر خان

سندھ حکومت کے موجودہ فیصلے کو یوں بھی عوامی حلقوں میں شک کی نگاہ سے دیکھا جارہا ہے، راجہ اظہر خان

لاک ڈاون کی آڑ میں ہندوؤں اور مسیحی برادری سمیت ایک اکثریتی طبقے کی مذہبی عبادات جمعہ کے اجتماعات اور رسومات میں تو رخنہ ڈالا گیا ھے، راجہ اظہر خان

دوسری جانب ایک مخصوص فرقے کی ایماء پر صرف جلوس کی خاطر یہ لاک ڈاؤن ہٹایا جارہا ہے۔ راجہ اظہر خان

تمام مسالک اور فرقوں کو بلاتفریق مذہب و مسلک مساوی حقوق دئیے جائیں، راجہ اظہر خان

دو روز قبل ام المومنین سیدہ عائشہ رضی اللہ تعالیٰ عنہا کے یوم وصال کے حوالے سے اجتماعات پر پابندی تھی اور آج اچانک سے یہ فیصلہ؟ راجہ اظہر خان

ہمارے ووٹرز اور حلقے کے عوام میں سخت اضطراب پایا جارھا ہے، کیا سندہ حکومت کے پاس کوئی جواب یا جواز ہے؟ راجہ اظہر خان

سندھ حکومت کے پاس اسکا جواز ھے تو وزیراعلی صاحب ٹی وی پر آکر اعلان کریں کہ جمعۃ الوداع اور عید کی نماز تک کوئی نیا حکم نامہ جاری نھی ہوگا، راجہ اظہر خان

بصورت یہی سمجھا جائیگا کہ سائیں سرکار سندھ دھرتی پہ خود فرقہ وارانہ فسادات کی آگ بھڑکانا چاہتی ہے، راجہ اظہر خان