بال ٹمپرنگ اور ایل بی ڈبلیو سے متعلق آئی سی سی کے نئے قوانین متوقع

دبئی : آسٹریلیا کے سابق کپتان این چیپل نے مشورہ دیا ہے کہ دنیا بھر کی ٹیموں کے کپتانوں گیند چمکانے کے لئے قدرتی اشیاء کے استعمال کی فہرست تیار کرنے کی ہدایت دی جائے اور ایل بی ڈبلیو قانون کو بھی تبدیل کیا جائے۔

تفصیلات کے مطابق سابق آسٹریلوی کپتان این چیپل نے آئی سی سی سے بال ٹیمپرنگ کرنے اور ایل بی ڈبلیو قانون کی تبدیلی کا مطالبہ کردیا ہے،کرکٹ کی دنیا کے معروف کھلاڑی اور حال کے کمنٹیٹر وتجزیہ نگار کہتے ہیں کہ کووڈ-19کے بعد تھوک کا استعمال مشکل ہوگا۔

ان کا کہنا ہے کہ بائولرز کے لئے ضروری ہوگا کہ وہ گیند کو چمکائیں تاکہ ان کو سوئنگ میں مدد ملے،اس کے لئے میرے پاس ایک سادہ سی تجویز ہے کہ آئی سی سی تمام ٹیسٹ کپتانوں سے گیند شائن کرنے کے لئے مصنوعی اشیا کی لسٹ بنوائے ،اس کے بعد اس میں سے جس کا بھی انتخاب ہو تو اس ایک چیز کو لازم کردے
ایان چیپل نے کہا ہے کہ جیسا کہ گیند سے چھیڑ چھاڑ ہمیشہ سے ایک متنازعہ مسئلہ رہا ہے، ایسے میں میں نے مشورہ دیا کہ کرکٹ ایڈمنسٹریٹر بین الاقوامی کپتانوں سے گیند چمکانے کے لئے قدرتی اشیاء کے استعمال کی فہرست تیار کرنے کو کہیںاس میں وہ اشیاء شامل ہوں جن کے بارے میں بالروں کو لگتا ہے کہ اس سے انہیں گیند کو سوئنگ کرانے میں مدد ملے گی۔

اس فہرست میں سے منتظمین کو ایک طریقہ انتخاب کرنا چاہئے جو جائز ہو اور باقی تمام طریقوں کو غیر قانونی قرار دے کر ان کے لئے سزا دی جانی چاہئے
انہوں نے کہا کہ جیسا کہ ان حالات میں کرکٹ میچز پر پابندی ہے ایسے میں اس فہرست کو بنانے کا یہ بہتر وقت ہے، گیندوں کو چمکانے کے لیے تھوک اور پسینے کا استعمال اب صحت کے نقطہ نظر سے خطرناک ہو سکتا ہے، گیند بازوں کو گیند چمکانے کے لئے ان ابتدائی طریقوں کے نئے اختیارات دینے چاہئے۔

چیپل نے ساتھ ہی کہا کہ منتظمین کو ایل بی ڈبلیو کے قوانین میں بھی تبدیلی کرنا چاہئے جس کو ہر بولر خوش آمدید کہے گا۔ نئے ایل بی ڈبلیو عہد نامے میں اگر کوئی بھی گیند بیٹ پر ٹكرائے بغیر پہلے پیڈ سے ٹکراتی ہے اور امپائر کے نقطہ نظر سے وہ گیند اسٹمپ سے ٹکرا رہی ہو تو ایسے میں بلے باز کو آؤٹ قرار دیا جائے۔

چاہے بلے باز شاٹ کھیلنے کی کوشش کررہا ہو یا نہیں۔انہوں نے کہا کہ اس بات سے فرق نہیں پڑنا چاہئے کہ وہ گیند کہاں ٹپا کھائی تھی اور پیڈ سے اسٹمپ کی لائن میں ٹکرائی یا نہیں۔

اگر گیند اسٹمپ کو مارنے جا رہی ہے تو آؤٹ ہے۔ انہوں نے کہا کہ اس تبدیلی سے متعلق بلے باز کافی ہائے توبہ مچائیں گے لیکن اس سے کچھ مثبت تبدیلی آئے گی جس میں سب سے بڑی بات کھیل منصفانہ ہوں گے، بلے باز اپنا وکٹ بچانے کے لئے صرف بلے کا استعمال کریں گے، پیڈ تو بلے باز کو صرف چوٹ سے بچانے کے لئے ہوتے ہیں