لاک ڈاؤن میں نرمی معیشت کے لیے بہتر ہے لیکن احتیاطی تدابیر پر عملدرآمد ضروری ہے ۔ عاطف اقبال ایگزیکٹو ڈائریکٹر ہائی کیو فارماسٹیکلز

لاک ڈاؤن میں نرمی معیشت کے لیے بہتر ہے لیکن احتیاطی تدابیر پر عملدرآمد ضروری ہے ۔
عاطف اقبال ایگزیکٹو ڈائریکٹر ہائی کیو فارماسٹیکلز نے جیوے پاکستان سے خصوصی گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ کرونا وائرس کو پھیلنے سے روکنے کے لیے لاک ڈاؤن ضروری تھا لیکن معیشت کا پہیہ جلانے کے لئے اس میں نرمی ایک اچھا فیصلہ ہے عوام کی ذمہ داری بڑھ گئی ہے کہ وہ حفاظتی احتیاطی تدابیر کو اپنائے کاروباری اور صنعتی شعبے کو بھی اس سلسلے میں خاص احتیاط برتنا ہوگی


دفاتر اور کاروباری اداروں کی ذمہ داری پہلے سے زیادہ بڑھ گئی ہے جو لوگ ضروری کام کاج کے لیے گھر سے باہر آرہے ہیں انہیں ایس او پی کو مدنظر رکھنا چاہیے احتیاطی تدابیر کا دامن ہاتھ سے نہیں چھوڑنا چاہیے اپنی حفاظت خود کریں اور اپنے پیاروں کے لئے خود کو محفوظ رکھنے کے لیے حفاظتی تدابیر ضرور اپنائیں انہوں نے کہا کہ پاکستان جیسے ملک میں معیشت کا پہیا چلانے کے لئے ضروری ہے کہ ہم زیادہ سے زیادہ وقت کام کریں پہلے ہی ہم جدید دنیا سے پیچھے ہیں ہمیں زیادہ محنت کرنے کی ضرورت ہے امید ہے کہ حکومت کے فیصلے اور اقدامات کے نتیجے میں کاروباری یا تجارتی سرگرمیوں میں تیزی آئے گی اور لوگوں کو روزگار کے بہتر مواقع حاصل ہوں گے ظاہر ہے کہ ہم پاکستان جیسے ملک میں غیر معینہ مدت تک لاک ڈاؤن نہیں رکھ سکتے تھے لوگوں کو زیادہ عرصہ روزگار سے دور اور محروم نہیں رکھا

جاسکتا اللہ کا بڑا کرم ہے کہ پاکستان میں حالات امریکہ اور یورپ کے دیگر ملکوں جیسے نہیں ہوئے لیکن اس کا یہ مطلب نہیں کہ ہم احتیاط چھوڑ دیں ۔رمضان المبارک کے بابرکت مہینے میں ہمیں اپنی عبادات اور دنیاوی فرائض کی ادائیگی پر توجہ مرکوز رکھنی ہے انہوں نے بتایا کہ فرماں کا شعبہ ان مشکل حالات میں بھی اپنا کام جاری رکھے ہوئے ہے فارما انڈسٹری کے پاس ڈیمانڈ آرڈرز بہت زیادہ ہیں لیکن مختلف بندشوں اور را مٹیریل کے حوالے سے لوگوں کو مشکلات کا سامنا ہے جس کی وجہ سے ڈیمانڈ کے مطابق سپلائی برقرار رکھنا مشکل کام ہے لیبر کا دفاتر اور کارخانوں تک پہنچنا بھی مشکل کام ہے کیونکہ ٹرانسپورٹیشن ابھی پوری طرح بحال نہیں ہوئی فارما سیکٹر ایس او پی پر اپنے طور پر بھرپور عملدرآمد کر رہا ہے اسٹاف کو گھر سے فیکٹری تک لانے اور واپس چھوڑنے کے لئے بھی ایس او پی پر عمل کیا گیا ہے ۔
ایک سوال پر انہوں نے فرنٹ لائن فائٹرز کے حوالے سے ڈاکٹروں اور طبی عملے کو زبردست خراج تحسین پیش کرتے ہوئے کہا کہ ہمارے ڈاکٹرز اور طبی اور نیند بھی عملہ سب مبارک باد کے حقدار ہیں تعریف کے قابل ہیں انھوں نے انتہائی مشکل وقت میں قوم کا ساتھ دیا ہے ہمارا مان رکھا ہے یہ قومی ہیروز ہیں ۔انہوں نے اپنی جان کو خطرے میں ڈالا اور اپنی جان کی پرواہ کیے بغیر اسپتالوں میں ڈیوٹیاں سرانجام دیں ان کے کام کو تاریخ میں ہمیشہ یاد رکھا جائے گا اور ان کی خدمات کو سنہری حروف سے یاد کیا جائے گا