حکومت کو بزنس اینڈ میڈیا فرینڈلی پالیسیاں بنانی ہوں گی ۔محمود پاریکھ کی جیوے پاکستان سے خصوصی گفتگو

پاکستان میں ایڈورٹائزنگ اینڈ میڈیا انڈسٹری کی مشہور شخصیت اور ایف پی سی سی آئی کی اسٹینڈنگ کمیٹی برائے میڈیا اینڈ ایڈورٹائزنگ کے چیئرمین محمود پاریکھ نے جیوے پاکستان ڈاٹ کام کے ایگزیکٹو ایڈیٹر وحید جنگ سے خصوصی گفتگو کرتے ہوئے اس بات پر زور دیا ہے کہ میڈیا انڈسٹری کے موجودہ حالات کے پیش نظر حکومت کو ملک میں بزنس اینڈ میڈیا فرینڈلی پالیسی بنانی ہوگی

اور ایسے لوگوں کو آگے لانا ہوگا جو بزنس اینڈ میڈیا انڈسٹری کے معاملات پر گہری نظر رکھتے ہو اور انکے مسائل کو سمجھتے ہو ں ۔انہوں نے کہا کہ ملکی معیشت کا استحکام اور فروغ بزنس انڈسٹری سے جڑا ہوا ہے اور مصنوعات کی بہتر فروخت اور ریونیو کے حصول میں اضافہ اسی صورت میں ممکن ہے جب ایڈورٹائزنگ اینڈ میڈیا انڈسٹری بھی ان کا ساتھ دے یہ سب ایک دوسرے سے جڑے ہوئے ہیں ۔حکومت کو ملک میں بزنس فرینڈلی ماحول پیدا کرنا ہوگا اس کے لئے ضروری اقدامات کرنے ہوں گے جس کے نتیجے میں معیشت مستحکم ہوگی اور ملک خوشحالی کی راہ پر گامزن ہوگا موجودہ حکومت چاہتی ہے کہ ملک میں روزگار کے نئے مواقع پیدا ہو لوگوں کو نوکری

نوجوانوں کے لیے نئے راستے کھلے اس مقصد کے لیے پاکستان کی میڈیا اینڈ ایڈورٹائزنگ انڈسٹری زبردست شعبے ہیں جن میں روزگار کے وسیع مواقع پیدا کیے جاسکتے ہیں تھوڑی سی توجہ دینے کی ضرورت ہے اور فرینڈلی پالیسیاں بنانے کی ضرورت ہے اس وقت جو اقدامات ہوئے ہیں ٹیکسوں کی بھرمار ہوئی ہے اور لوگوں کو ڈرایا دھمکایا جارہا ہے یا ہراساں کیا جارہا ہے ایسے میں بزنس فروغ نہیں پا رہا بلکہ لوگوں نے ہاتھ کھینچ لیا ہے صنعتکاروں سرمایہ کاروں کا اعتماد بحال کرنے اور انہیں اعتماد دینے کے لیے ضروری ہے کہ حکومت ان کے ساتھ اعتماد سازی کے ماحول کو بہتر بنائے تاکہ ملکی معیشت میں پیسہ لگایا جائے اور خوشحالی کی طرف آگے بڑھا جائے موجودہ حالات ویڈیو انڈسٹری کے لئے مشکل ہیں ڈیپریشن کا وقت ہے ملازمین کی تنخواہوں کی ادائیگی مسئلہ بنا ہوا ہے

حکومت اشتہارات کی مد میں واجبات ادا کرے جب میڈیا ہاؤسز کے واجبات ادا ہونگے تو وہ ملازمین کی تنخواہ اور بقایا جات ادا کرسکیں گے۔انہوں نے کہا کہ پاکستان کی میڈیا اینڈ ایڈورٹائزنگ انڈسٹری میں بہت گنجائش ہے ہمارے پاس ٹیلنٹ کی کمی نہیں ہے تخلیقی صلاحیتوں سے ہمارے لوگ مالامال ہیں ہماری حکومت کو تھوڑی سی سرپرستی کرنے کی ضرورت ہے اچھی دوستانہ پالیسی بنا کر اچھے مثبت نتائج حاصل کیے جاسکتے ہیں پاکستان میں مارکیٹنگ کرنے والے لوگوں کی حوصلہ افزائی کی ضرورت ہے جو پاکستان میں مختلف بزنس اور پروڈکٹس کی سیل اور ریونیو کو نمایاں فروغ دلا سکتے ہیں ۔پاکستان کا میڈیا اینڈ مارکیٹنگ انڈسٹری نئے روزگار کے مواقع پیدا کر سکتی ہے نئے آئیڈیاز کے ساتھ بہتر نتائج حاصل کیے جاسکتے ہیں ٹیکسوں کی شرح کو مناسب اور متوازن پالیسی کے ذریعے بزنس فرینڈلی ماحول کو آگے بڑھایا جا سکتا ہے دنیا کے ترقی یافتہ ملکوں نے اپنے یہاں بزنس فرینڈلی ماحول فراہم کر رکھا ہے ہمیں بھی اس سمت میں آگے بڑھنا ہوگا