ڈپٹی اسپیکر پنجاب اسمبلی بھی کورونا وائرس کا شکار

دوست محمد مزاری کا کورونا ٹیسٹ مثبت آگیا ہے وہ 2 ہفتے قبل دبئی سے پاکستان آئے تھے لیکن اس سے قبل ڈپٹی اسپیکر دوست محمد مزاری کا کورونا ٹیسٹ منفی آیا تھا۔

ڈپٹی اسپیکر پنجاب اسمبلی دوست محمد مزاری نے کہا کہ خود کو اپنی رہائش گاہ پر قرنطینہ کر لیا ہے تاہم کوئی علامات بظاہرنہیں ہیں صرف ٹیسٹ مثبت آیا ہے۔

انہوں نے کہا کہ 28 اپریل کو دبئی سے وطن واپس پہنچا تھا اور نجی لیب سے کورونا ٹیسٹ کرایا لیکن رپورٹ منفی آئی تھی۔

اس قبل اسپیکر قومی اسمبلی اسد قیصر، گورنر سندھ عمران اسماعیل سمیت بیشتر اہم افراد بھی کورونا کا شکار ہو چکے ہیں۔

پاکستان میں کورونا وائرس سے جاں بحق افراد کی تعداد 639 ہو گئی جبکہ کورونا کے مریضوں کی تعداد 29 ہزار 465 تک پہنچ چکی ہے۔

نیشنل کمانڈ اینڈ آپریشن سنٹر کی جانب سے جاری کردہ تازہ اعداد و شمار کے مطابق پاکستان میں گزشتہ 24 گھنٹوں کے دوران 1991 افراد میں کورونا وائرس کی تصدیق اور 21 اموات رپورٹ ہوئی ہیں۔

ملک میں کورونا وائرس کے 8 ہزار 23 مریض صحت یاب ہو چکے ہیں۔

سندھ میں کورونا کے اب تک 10,771 کیسز رپورٹ ہوئے ہیں۔ پنجاب 11 ہزار 93، خیبرپختونخوا 4,509، بلوچستان 1,935، اسلام آباد 641، آزاد کشمیر 86 اورگلگت بلتستان میں 430 افراد میں وائرس کی تصدیق ہوئی ہے۔

خیبرپختونخوا میں کورونا وائرس سے سب سے زیادہ 234 اموات ہوئی ہیں۔ سندھ میں 180، پنجاب میں 192، بلوچستان 24، اسلام آباد 05 اور گلگت بلتستان میں کورونا سے 4 افراد جاں بحق ہوئے۔

پاکستان میں کورونا وائرس کو سامنے آئے 2 ماہ سے زائد عرصہ بیت چکا ہے، ابتدا میں کیسز میں اضافے کی رفتار سست تھی لیکن اب اس میں تیزی سے اضافہ دیکھنے میں آیا ہے۔
پاکستان میں کورونا وائرس کا پہلا کیس 26 فروری 2020 کو کراچی میں رپورٹ ہوا جس کے ایک ماہ بعد یعنی 25 مارچ تک کیسز کی تعداد ایک ہزار تک پہنچ چکی تھی۔

ملک میں کورونا وائرس سے پہلی موت 18 مارچ کو خیبرپختونخوا میں ہوئی اور تادم تحریر اموات کی تعداد 618 ہو گئی ہے۔

Courtesy Hum News Urdu