شارجہ میں مقیم ایک پاکستانی کارکن تنخواہ نہ ملنے پر شدید مشتعل ہو گیا، اورسڑک کنارے کھڑی متعد لگژری گاڑیوں کے شیشے توڑ ڈالے،

متحدہ عرب امارات میں اس وقت کورونا کی وبا کی وجہ سے کاروبار ٹھپ ہو کر رہ گئے ہیں، جس کی وجہ سے کمپنیوں نے ہزاروں ملازمین کو نوکریوں سے فارغ کر دیا ہے۔ ایک اندازے کے مطابق حالیہ معاشی بحران کے باعث 20 ہزار پاکستانیوں کی نوکریاں ختم ہو گئی ہیں، جو امارات میں انتہائی پریشان پھر رہے ہیں اور فوری طور پر وطن واپسی کے منتظر ہیں۔

سعودی اخبار المرصد کی جانب سے بتایا گیا ہے کہ شارجہ میں مقیم ایک پاکستانی کارکن تنخواہ نہ ملنے پر شدید مشتعل ہو گیا، اورسڑک کنارے کھڑی متعد لگژری گاڑیوں کے شیشے توڑ ڈالے، جس کے باعث گاڑی مالکان کا ہزاروں درہم کا نقصان ہو گیا ہے۔المرصد کے مطابق شارجہ میں رہائش پذیر ایک پاکستانی کارکن کوکمپنی کی جانب سے گزشتہ تین ماہ کی تنخواہوں کی ادائیگی نہ کی گئی۔

پاکستانی کارکن کی جانب سے کئی بارروکی گئی تنخواہوں کا مطالبہ کیا گیا،مگر کمپنی انتظامیہ کی جانب سے اسے تنخواہوں کی مد میں رقم کی ادائیگی نہ کی گئی ۔ جس پر پاکستانی کارکن پریشانی میں اپنے ہوش و حواس کھو بیٹھا اور سڑک کنارے کھڑی متعدد گاڑیوں کے شیشے توڑ ڈالے۔ اس واقعے کی ویڈیو بھی سامنے آئی ہے۔ ویڈیو بنانے والے نے پاکستانی کی جانب سے توڑ پھوڑ کا شکار ہونے والی گاڑیاں دکھائی ہیں۔
جو خاصی مہنگی معلوم ہوتی ہیں۔ ویڈیو بنانے والا کوئی عربی ہے، جس نے بتایا ہے کہ ان گاڑیوں کے شیشے ایک پاکستانی کارکن نے توڑے ہیں،