اٹھارویں ترمیم پر کیا ڈیل ہو رہی ہے؟ چڑیا کی خبر…..

اٹھارویں ترمیم کے حوالے سے حکومت اور اپوزیشن کے درمیان بات چیت ہو رہی ہے اور اٹھارویں ترمیم کے حوالے سے کیا ڈیل طے پانے والی ہے اس بارے میں نجم سیٹھی کی چڑیا اپنی خبر لائی ہے ۔نجم سیٹھی کا کہنا ہے کہ چڑیا کے مطابق بات چیت ہو رہی ہے لیکن یہ غیر رسمی بات چیت ہے کیونکہ دونوں طرف سے کوئی کمیٹی نہیں بنی ۔اسد عمر سے یہ کہہ دیا گیا ہے کہ ہم بات کریں گے ۔آپ اسٹیبلشمنٹ کے ساتھ رابطے میں رہیں اور اب الیکشن کو ساتھ لے کر چلیں جہاں تک ممکن ہو اس کی وجہ یہ ہے کہ یہ جو نیب کا معاملہ ہے اس میں دو رائے تھی ایک تو پرائم منسٹر کی رائے تھی کہ سختی کرو اور اپوزیشن کو کوئی رعایت مت دو میپکو ان کے پیچھے لگا کے رکھو اور نیب کو کہہ دو کہ پی ٹی آئی کی طرف نہیں جانا صرف باقی جماعتوں کی طرف جانا ہے ۔
یہ تو میری چڑیا کی خبر تھی
لیکن دوسری طرف اسٹیبلشمنٹ کی رائے مختلف تھی وہ چاہتے تھے کہ تھوڑی آکسیجن اپوزیشن کو بھی مل جائے تاکہ ہم بد نام نہ ہو ں۔ ایسا تاثر نہ ملے کہ سارا معاملہ یکطرفہ چل رہا ہے ۔اب چونکہ نیب میں زیادہ تر اسٹیبلشمنٹ کے پرانے لوگ ہیں اور الزام اسٹیبلشمنٹ پر آ رہا ہے اس لیے دباؤ آیا تو اس کو مساوی طور پر لے کر چلیں یا تو حکومتی پارٹی کے لوگوں پر بھی اٹیک کریں یا پھر اپوزیشن کے لوگوں کے ساتھ بھی نرم رویہ رکھیں ۔اس وقت رونا کا مسئلہ بھی چل رہا ہے انڈیا کا مسئلہ بھی چل رہا ہے اور ہمیں اتفاق رائے قومی سطح پر چاہیے اس لئے ذرا نیب کا ہاتھ ہلکا کیا جائے کیونکہ صورتحال میں ایکشن سے کافی بدنامی ہو سکتی ہے اور بزنس کمیونٹی اور بیوروکریٹ بھی پیچھے ہٹ چکے تھے اور ان کی وجہ سے ایک آدمی پر منفی اثر پڑ رہا ہے معاشرت رکی ہوئی ہے اس لیے فیصلہ کیا گیا کہ تھوڑی بہت ترمیم بھی کی جائے اور تھوڑی بہت سیاسی اتفاق رائے کی صورتحال بہتر بنائی جائے یہ اسٹیبلشمنٹ کی تجویز تھی جو حکومت کو دی گئی ۔


حکومت ایک آرڈینینس لے کر آئیں جسمیں اسٹیبلشمنٹ کی جو رائے تھی اس کو اہمیت دی گئی بیوروکریٹس اور بزنس مین کو تھوڑی بہت چھوٹ دے دی گئی یوٹرن چار مہینے تک رہا اور تاثر دیا گیا کہ بزنس کمیونٹی کو ہراساں نہیں کیا جائے گا اور بیوروکریسی کے ہاتھ بھی نہیں باندھے جائیں گے انہیں خوفزدہ نہیں کیا جائے گا تاکہ وہ فیصلہ کرسکیں اور کام آگے بڑھ سکے ۔
اس معاملے کو ہینڈل تو حکومت نے کر لیا تھا لیکن آرڈیننس کی مدت ختم ہو گئی ہے اور اب اسے دوبارہ کرنا ہے اب اگر تو دوبارہ ارڈینیس لانا پھر تو اپوزیشن کی ضرورت نہیں ہے لیکن اگر قانون بنانا ہے تو پھر اپوزیشن کی ضرورت پڑے گی اور حکومت کو اپوزیشن کو ساتھ لے کر چلنا پڑے گا اس کے بغیر قانون بن نہیں سکتا ڈبو پوزیشن کو ساتھ لے کر چلیں گے تو اپوزیشن بھی کچھ رعایت مانگی گئی ۔
منصفین نے کہا کہ دراصل بیروکریسی اور بزنس کمیونٹی کا دباؤ ہے کہ چارچر مہینے والے انڈین سے کام نہیں چلے گا آپ مستقل قانون بنائیں تاکہ غیر یقینی صورتحال کا خاتمہ ہو اور اب قانون بنانے کے لئے حکومت بے بس ہے اسے اپوزیشن کا تعاون چاہیے اس لیے اسد عمر ادھر ادھر بھاگ دوڑ کر رہے ہیں
نجم سیٹھی نے کہا کہ اپوزیشن نے تو پہلے دن سے ہی نیب کے حوالے سے ایک گراف بنا کر دیا ہوا ہے پیپلزپارٹی نے بھی دیا ہوا ہے اب جو کچھ میڈیا میں آرہا ہے اسے مزید الجھن اور کنفیوژن پیدا ہو رہی ہے ۔
نجم سیٹھی نے کہا کہ اپوزیشن کا سب سے بڑا معاملہ میاں نواز شریف کی سزا ہے جس کی اپیل عدالت میں ہے اسد عمر اور شیخ رشید جو بھی بات چیت کریں گے انہیں اپوزیشن کی بات بھی سننی پڑے گی ۔نئی والا معاملہ ابھی حتمی شکل اختیار کرتا نظر نہیں آرہا باقی چل رہی ہے لیکن ابھی وقت لگے گا