بھارتی قیادت کے بیانات غیر سنجیدہ،ایل او سی پر جارحیت بڑھ رہی ہے :فوجی ترجمان

پاک فوج کے ترجمان (ڈائریکٹر جنرل آئی ایس پی آر) میجر جنرل بابر افتخار نے کہا ہے بھارتی ملٹری لیڈر شپ کے بیانات غیرسنجیدہ ہیں،ایل او سی پر معصوم شہریوں کو شہید کرنے کے واقعات بڑھ رہے ہیں،ایل او سی پر بھارتی جارحیت بڑھ رہی ہے ۔ عالمی مبصرین کو دعوت دے رہے ہیں وہ آئیں اور لائن آف کنٹرول کادورہ کریں اور بتائیں کہاں ہیں لانچ پیڈ۔بھارت کا وطیرہ ہے کہ جب بھی کسی مسئلے میں پھنسے الزام پاکستان پر لگا تا ہے ،امریکی رپورٹ میں بھارت کواقلیتوں سے برے سلوک پر شامل کیا گیا، پاکستان میں اقلیتوں کے ساتھ سلوک کا بھارت ہمیشہ پراپیگنڈہ کرتا ہے ،پاکستان میں اقلیتوں کے ساتھ سلوک کو پوری دنیا نے سراہا ہے ۔نجی ٹی وی کو خصوصی انٹرویو میں انہوں نے کہامقبوضہ کشمیر میں بھارتی بربریت اور ظلم سے پوری دنیا آگا ہ ہے ، بھارت اندرونی مسائل سے توجہ ہٹانے کیلئے ایل اوسی پر فائرنگ کررہا ہے ، لانچ پیڈ سے متعلق بھارتی بیانات بھی بے بنیاد ہیں،بھارت کے اپنے سیٹلائٹ ہیں،،بھارت میں مسلمانوں کے ساتھ ناروا سلوک رکھا جارہا ہے ،دنیا بھارت میں مسلمانوں پر مظالم کا نوٹس لے ، ہم قوم کا دفاع ہر صورت کرینگے ، بھارت میں کچھ بھی ہوجائے اسے پاکستان کے ساتھ جوڑ دیا جاتا ہے ، ہم نے کرتار پور میں جو اقدامات کئے انہیں پوری دنیا میں سراہا جارہا ہے ۔میجر جنرل بابر افتخار نے کہا ملک اور قوم کی خاطر سب کچھ حاضر ہے ، کورونا کیخلاف جنگ ابھی جاری ہے ، جب تک ویکسین ایجاد نہیں ہوجاتی جنگ جاری رہے گی،ویکسین کی تیاری تک ایس اوپیز پر عمل کرنا چاہئے ،آرمی چیف کی ہدایت پر سول انتظامیہ کی بھرپور مدد کی جارہی ہے ، افواج پاکستان کو جب سول ایڈمنسٹریشن کی مدد کیلئے بلایا گیا تو ہم ملک کے مختلف اضلاع میں سول انتظامیہ کی مدد کررہے ہیں ، افواج پاکستان کے ہسپتالوں میں جو لیبارٹریز ہیں ان میں بھی کورونا کے ٹیسٹ کئے جارہے ہیں،جہاں پر میڈیکل کی سہولت کی ضرورت ہے وہاں پر مہیا کی جارہی ہے ،بیشتر اضلاع میں پاک فوج تعینات ہے ،ہم سول ایڈمنسٹریشن اور پولیس کو سپورٹ کررہے ہیں، پی پی ایز کی تیاری بڑی تعداد میں جاری ہے ،پاک فوج کی تنخواہوں سے ریلیف فنڈ میں رقم دی گئی، اقلیتوں کی بھی بھرپور مدد کی جارہی ہے ، رقم سے ساڑھے تین لاکھ لوگوں کیلئے پیکیج تیار کیا گیا، جہاں پر کورونا کیسز کی تعداد زیادہ ہورہی ہے وہاں پر خصوصی انتظامات کئے جارہے ہیں۔انہوں نے کہاچین نے کورونا کے معاملے میں ہماری بھرپور مدد کی ہے ،وقت کے ساتھ ساتھ ہماری ورکنگ ریلیشن سٹریٹجی بڑھ رہی ہے ،چین کے تعاون پر ان کے شکر گزار ہیں، پاکستانی میڈیا کا کورونا پر مثبت اور ا ہم کردار ہے ،سماجی فاصلے سے متعلق پاک فوج عملد رآمد کررہی ہے ، میں بھی تراویح گھر میں اپنے بچوں کے ساتھ پڑھ رہا ہوں۔فوج ڈسپلن کا ادارہ ہے اوراس میں عملدرآمد مشکل نہیں ،قومی سلامتی کی بات ہو تو صحت کا شعبہ بھی اس میں شامل ہے ۔ ڈی جی آئی ایس پی آرکا کہنا تھا افواجِ پاکستان کے ذیلی ادارے این 95ماسک بھی تیار کر رہے ہیں،جن جن اضلاع میں فوج ہے وہاں غریب افرادمیں 350,000(فوڈ پیک) تقسیم کئے ہیں۔این سی او سی کا قیام کورونا وبا کے خلاف قومی کوشش کو مزید موثر بنانااورون ونڈو آپریشن کے ذریعے فیصلہ سازوں کو سفارشات پہنچانا ہے ۔ٹی ٹی کیو سٹرٹیجی سے قومی سطح کا سٹرکچر مرتب کیا۔چین کی ایک میڈیکل ٹیم دو ہفتے پاکستان میں گزار کر چلی گئی ہے جبکہ دوسری ٹیم موجود ہے ۔اللہ کے فضل سے کشمیر اور گلگت بلتستان میں کورونا کیسز باقی ملک سے بہت کم ہیں۔ دُنیا بھارت میں مسلمانوں پر مظالم کا نوٹس لے ورنہ معاملات خراب ہوسکتے ہیں،پاک افغان سرحد پر باڑ لگانے کا کام تقریباًََ مکمل ہے

Courtesy 92 news