ڈیم فنڈ کا پیسہ کہاں گیا، کس نے کتنا کھایا؟ نجم سیٹھی کے سنسنی خیز انکشافات

ڈیم فنڈ کا پیسہ کہاں گیا کتنا پیسہ جمع ہوا پیسہ کہاں لگا کہاں پہنچا کس کی جیبوں میں گیا کس نے کھایا ۔اس حوالے سے مختلف سوالات اٹھائے جا رہے ہیں اور اس بارے میں پاکستان کے سینئر صحافی اور تجزیہ نگار نجم سیٹھی نے تاریخی حوالوں سے بحث کرتے ہوئے بتایا ہے کہ بڑے ڈیم بننے میں کافی وقت لگتا ہے اور پاکستان میں اتنا وقت سیاسی حکومتوں کو ملا نہیں ۔یہی وجہ ہے کہ سیاسی حکومتوں کے دور میں ڈیم پائے تکمیل تک نہیں پہنچ سکے ۔پاکستان میں ایوب خان کو وقت ملا اور انہوں نے ڈیم بنائے وہ لمبا پروگرام لے کر آئے تھے پانچ پانچ سال کے پروگرام بھی انہوں نے پیش کیے تھے اور ڈیم بنا کر بھی دکھائے ۔ان کے بعد ملک ٹوٹ گیا اور اس کے بعد ذوالفقار علی بھٹو کی حکومت کو اتنا موقع نہیں ملا ۔البتہ جنرل ضیاءالحق کو لمبا وقت ملا لیکن وہ کوئی نیا ڈیم نہ بنا سکے ۔جنرل مشرف کو بھی طویل وقت ملا لیکن انہوں نے بھی غیر ملکی امداد وار اون ٹیرر پر خرچ کردی ڈیم پر پیسے خرچ نہیں کیے ۔نواز شریف اور بے نظیر کے حکومتوں کو اتنا وقت نہیں ملا کہ وہ کوئی طویل المعیاد ڈیم بنا سکتے اب عمران خان کی حکومت کے پاس موقع ہے وہ چاہے تو ڈیم پے کام کو آگے بڑھا سکتے ہیں اور ثاقب نثار نے جو ڈیم فنڈ بنایا تھا وہ جو ابھی ڈرامہ تھا وہ پیسہ کہاں گیا اس کا بھی حساب دیں اور خود کوئی اکاؤنٹ بنائیں اور کوئی ڈیم فنڈ قائم کریں جس میں مسلسل اور لگاتار پیسے جمع ہو اور ڈیم بنانا شروع کریں