پاکستان کرکٹ بورڈ نے کبھی مجھے بچانے کی کوشش نہیں کی، محمد آصف

لاہور : اسپاٹ فکسنگ میں سزا یافتہ سابق فاسٹ بالر محمد آصف نے کہا ہے کہ کرکٹ بورڈ نے کبھی مجھے بچانے کی کوشش نہیں کی، کیرئیر کا جس طرح اختتام ہوا اس پر افسو س ہے، محمد عامر کاکیریئر بچانے پر پی سی بی کو برا بھلا کہتا ہوں۔

یہ بات انہوں نے ایک میڈیا انٹرویو میں کہی، محمد آصف نے اپنا دکھ اور غم لفظوں کی شکل میں پی سی بی پر تنقید کرتے ہوئے نکالنا شروع کر دیاہے ان کا کہنا ہے کہ میرے کیرئیر کا اختتام اچھے انداز میں نہیں ہوا، میں نے ایسا کبھی نہیں چاہا تھا، میرا عزم یہی تھا کہ میرا کیرئیر شاندار ہو اور اس کا اختتام بھی اچھا ہو لیکن ایسا نہ ہوسکا جس کا مجھے افسوس ہے۔

محمد آصف کا کہنا ہے کہ ہر کوئی زندگی میں غلطیاں کرتا ہے، مجھ سے بھی غلطیاں ہوئیں۔ جو ہونا تھا وہ ہو گیا، اب سب ٹھیک ہے۔ مجھ سے پہلے بھی کھلاڑی فکسنگ میں ملوث تھے اور بعد میں بھی ملوث ہیں، مجھ سے پہلے فکسنگ میں ملوث ہونے والے کھلاڑی پی سی بی میں فرائض انجام دے رہے ہیں۔

محمد آصف نے مزید کہا کہ پی سی بی نے میرا کیرئیر بچا کر رکھنے کی کوشش نہیں کی حالانکہ ہر کوئی میری بولنگ کی تعریف کرتا تھا، میں کیرئیر میں جتنا بھی کھیلا دنیا ہلا کر رکھ دی تھی، اتنے سالوں بعد بھی دنیا کے بہترین بیٹسمین آج بھی میری تعریف کرتے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ پاکستان جاؤں گا اور ضروت پڑی تو کام بھی کرنا چاہوں گا لیکن اس وقت وہاں جگہ نہیں ہے، نوے کی دہائی کے کرکٹر ز کے ہاتھوں میں سارا کام ہے، اس لیے ہمارے لیے کوئی چانس نہیں ہے۔

‏واضح رہے کہ اسپاٹ فکسنگ اسکینڈل میں محمد آصف کو 5 برس کی پابندی کا سزا کا سامنا کرنا پڑا تھا جب کہ بعد ازاں محمد عامر کی انٹر نیشنل کرکٹ میں واپسی ہوئی لیکن محمد آصف کو دوبارہ موقع نہ مل سکا، محمد آصف گزشتہ چند ماہ سے امریکا میں مقیم ہیں اور وہاں مستقل رہائش اختیار کرنے کے لیے کوشاں ہیں